Skip to main content

وَّالشَّفْعِ وَالْوَتْرِۙ

وَٱلشَّفْعِ
اور قسم ہے جفت کی
وَٱلْوَتْرِ
اور قسم ہے طاق

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

اور جفت اور طاق کی

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

اور جفت اور طاق کی

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

اور جفت اور طاق کی

احمد علی Ahmed Ali

اور جفت اور طاق کی

أحسن البيان Ahsanul Bayan

جفت اور طاق کی !۔ (۱)

۳۔۱اس سے مراد جفت اور طاق عدد ہیں یا وہ معدودات جو جفت اور طاق ہوتے ہیں بعض کہتے ہیں کہ یہ دراصل مخلوق کی قسم ہے اس لیے کہ مخلوق جفت یا طاق ہے اس کے علاوہ نہیں۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

اور جفت اور طاق کی

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

اور جفت اور طاق کی!

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

اورجُفت اور طاق کی۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

اور جفت و طاق کی

طاہر القادری Tahir ul Qadri

اور جفت کی قَسم اور طاق کی قَسم٭، ٭ جفت (جوڑا) سے مراد کل مخلوق ہے جو جوڑوں کی صورت میں پیدا کی گئی ہے، اور طاق (فرد و تنہا) سے مراد خالق ہے جو وحدہ لا شریک ہے۔ یا شَفع یومِ نحر (قربانی) اور وَتر یومِ عرفہ (حج) ہے، یا شَفع سے مراد دنیا کے شب و روز ہیں اور وَتر سے مراد یومِ قیامت ہے جس کی کوئی شب نہ ہوگی۔ یا شَفع سے مراد سال بھر کی عام جفت راتیں ہیں اور وَتر سے مراد سال بھر کی برکت والی طاق راتیں ہیں، مثلاً شبِ معراج، شبِ برات اور شبِ قدر وغیرہ جو پے در پے رجب، شعبان اور رمضان میں آتی ہیں۔ یا شَفع سے مراد حضرت آدم علیہ السلام اور حضرت حواء علیہا السلام کا پہلا جوڑا ہے اور وَتر سے مراد تنہا حضرت آدم علیہ السلام، جن سے تخلیقِ انسانیت کی ابتداء ہوئی۔