Skip to main content

كَذَّبَتْ ثَمُوْدُ الْمُرْسَلِيْنَ ۖ

كَذَّبَتْ
جھٹلایا
ثَمُودُ
ثمود نے
ٱلْمُرْسَلِينَ
رسولوں کو

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

ثمود نے رسولوں کو جھٹلایا

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

ثمود نے رسولوں کو جھٹلایا

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

ثمود نے رسولوں کو جھٹلایا،

احمد علی Ahmed Ali

قوم ثمود نے پیغمبروں کو جھٹلایا

أحسن البيان Ahsanul Bayan

ثمودیوں (١) نے بھی پیغمبروں کو جھٹلایا۔

١٤١۔ ١ ثمود کا مسکن حضر تھا جو حجاز کے شمال میں ہے، آجکل اسے مدائن صالح کہتے ہیں۔ (ایسر التفاسیر) یہ عرب تھے۔ نبی صلی اللہ علیہ وسلم تبوک جاتے ہوئے ان بستیوں سے گزر کر گئے تھے، جیسا کہ پہلے گزر چکا ہے۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

(اور) قوم ثمود نے بھی پیغمبروں کو جھٹلا دیا

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

ﺛمودیوں نے بھی پیغمبروں کو جھٹلایا

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

قومِ ثمود نے رسولوں کو جھٹلایا۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

او قوم ثمود نے بھی مرسلین کی تکذیب کی

طاہر القادری Tahir ul Qadri

(قومِ) ثمود نے (بھی) پیغمبروں کو جھٹلایا،

تفسير ابن كثير Ibn Kathir

صالح (علیہ السلام) اور قوم ثمود
اللہ تعالیٰ کے بندے اور رسول حضرت صالح (علیہ السلام) کا واقعہ بیان ہو رہا کہ آپ اپنی قوم ثمود کی طرف رسول بنا کر بھیجے گئے تھے یہ لوگ عرب حجر نامی شہر میں رہتے تھے جو وادی القری اور ملک شام کے درمیان ہے۔ یہ عادیوں کے بعد اور ابراہمیوں سے پہلے تھے شام کی طرف جاتے ہوئے آپ کا اس جگہ سے گزرنے کا بیان سورة اعراف کی تفسیر میں پہلے گزرچکا ہے۔ انہیں ان کے نبی نے اللہ کی طرف بلایا کہ یہ اللہ کی توحید کو مانیں اور حضرت صالح (علیہ السلام) کی رسالت کا اقرار کریں لیکن انہوں نے بھی انکار کردیا اور اپنے کفر پر جمے رہے اللہ کے پیغمبر کو جھوٹا کہا۔ باوجود اللہ سے ڈرتے رہنے کی نصیحت سننے کی پرہیزگاری اختیار نہ کی۔ باوجود رسول امین کی موجودگی کے راہ ہدایت اختیار نہ کی۔ حالانکہ نبی کا صاف اعلان تھا کہ میں اپنا کوئی بوجھ تم پر ڈال نہیں رہا میں تو رسالت کی تبلیغ کے اجرا کا صرف اللہ تعالیٰ سے خواہاں ہوں۔ اس کے بعد اللہ کی نعمتیں انہیں یاد دلائیں۔