Skip to main content

يَخْرُجُ مِنْهُمَا اللُّـؤْلُـؤُ وَالْمَرْجَانُۚ

يَخْرُجُ
نکلتے ہیں
مِنْهُمَا
ان دونوں سے
ٱللُّؤْلُؤُ
موتی
وَٱلْمَرْجَانُ
اور مونگے

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

اِن سمندروں سے موتی اور مونگے نکلتے ہیں

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

اِن سمندروں سے موتی اور مونگے نکلتے ہیں

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

ان میں سے موتی اور مونگا نکلتا ہے،

احمد علی Ahmed Ali

ان دونوں میں سے موتی اور مونگا نکلتا ہے

أحسن البيان Ahsanul Bayan

ان دونوں میں سے موتی اور مونگے برآمد ہوتے ہیں (١)

٢٢۔١ مَرْجَان سے چھوٹے موتی یا پھر مونگے مراد ہیں کہتے ہیں آسمان سے بارش ہوتی ہے تو سیپیاں اپنے منہ کھول دیتی ہیں، جو قطرہ ان کے منہ کے اندر پڑ جاتا ہے، وہ موتی بن جاتا ہے۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

دونوں دریاؤں سے موتی اور مونگے نکلتے ہیں

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

ان دونوں میں سے موتی اور مونگے برآمد ہوتے ہیں

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

ان دونوں دریاؤں سے موتی اور مونگے نکلتے ہیں۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

ان دونوں دریاؤں سے موتی اور مونگے برآمد ہوتے ہیں

طاہر القادری Tahir ul Qadri

اُن دونوں (سمندروں) سے موتی (جس کی جھلک سبز ہوتی ہے) اور مَرجان (جِس کی رنگت سرخ ہوتی ہے) نکلتے ہیں،