Skip to main content

وَاَشْرِكْهُ فِىْۤ اَمْرِىْ ۙ

وَأَشْرِكْهُ
اور شریک کردے اس کو
فِىٓ
میں
أَمْرِى
میرے کام (میں)

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

اور اس کو میرے کام میں شریک کر دے

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

اور اس کو میرے کام میں شریک کر دے

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

اور اسے میرے کام میں شریک کر

احمد علی Ahmed Ali

اور اسے میرے کام میں شریک کر دے

أحسن البيان Ahsanul Bayan

اور اسے میرا شریک کار کر دے (١)

٣٢۔١ کہتے ہیں کہ موسیٰ علیہ السلام جب فرعون کے شاہی محل میں زیر پرورش تھے تو کھجور یا موتی کی بجائے آگ کا انگارا منہ میں ڈال لیا تھا جس سے ان کی زبان جل گئی اور اس میں لکنت پیدا ہوگئی (ا بن کثیر) جب اللہ تعالٰی نے انہیں حکم دیا کہ فرعون کے پاس جا کر میرا پیغام پہنچاؤ تو حضرت موسیٰ علیہ السلام کے دل میں دو باتیں آئیں ایک تو یہ کہ وہ بڑا جابر اور متکبر بادشاہ ہے بلکہ رب ہونے تک کا دعویدار ہے دوسرا یہ کہ موسیٰ علیہ السلام کے ہاتھوں اس کی قوم کا ایک آدمی مارا گیا تھا اور جس کی وجہ سے موسیٰ کو اپنی جان بچانے کے لیے وہاں سے نکلنا پڑا تھا یعنی ایک فرعون کی عظمت وجباریت کا خوف اور دوسرا اپنے ہاتھوں ہونے والے واقعہ کا اندیشہ اور ان دونوں پر زائد تیسری بات زبان میں لکنت حضرت موسیٰ علیہ السلام نے دعا فرمائی کہ یا اللہ ! میرا سینہ کھول دے تاکہ میں رسالت کا بوجھ اٹھا سکوں میرے کام کو آسان فرما دے یعنی جو مہم مجھے درپیش ہے اس میں میری مدد فرما اور میری زبان کی گرہ کھول دے تاکہ فرعون کے سامنے میں پوری وضاحت سے تیرا پیغام پہنچا سکوں اور اگر ضرورت پیش آئے تو اپنا دفاع بھی کر سکوں اس کے ساتھ یہ دعا بھی کی کہ میرے بھائی ہارون علیہ السلام کو (کہتے ہیں کہ یہ عمر میں موسیٰ علیہ السلام سے بڑے تھے) بطور معین اور مددگار میرا وزیر اور شریک کار بنا دے وزیر موازر کے معنی میں ہے یعنی بوجھ اٹھانے والا جس طرح ایک وزیر بادشاہ کا بوجھ اٹھاتا ہے اور امور مملکت میں اسکا مشیر ہوتا ہے اسی طرح ہارون علیہ السلام میرا مشیر اور بوجھ اٹھانے والا ساتھی ہو۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

اور اسے میرے کام میں شریک کر

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

اور اسے میرا شریک کار کر دے

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

اسے میرے کام (رسالت) میں میرا شریک بنا۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

اسے میرے کام میں شریک بنادے

طاہر القادری Tahir ul Qadri

اور اسے میرے کارِ (رسالت) میں شریک فرما دے،