Skip to main content

يَعْلَمُوْنَ ظَاهِرًا مِّنَ الْحَيٰوةِ الدُّنْيَا ۖ وَهُمْ عَنِ الْاٰخِرَةِ هُمْ غٰفِلُوْنَ

يَعْلَمُونَ
وہ جانتے ہیں
ظَٰهِرًا
ظاہری پہلو
مِّنَ
سے
ٱلْحَيَوٰةِ
زندگی کا
ٱلدُّنْيَا
دنیا کی
وَهُمْ
اور وہ
عَنِ
سے
ٱلْءَاخِرَةِ
آخرت
هُمْ
وہ
غَٰفِلُونَ
غافل ہیں

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

لوگ دُنیا کی زندگی کا بس ظاہری پہلو جانتے ہیں اور آخرت سے وہ خود ہی غافل ہیں

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

لوگ دُنیا کی زندگی کا بس ظاہری پہلو جانتے ہیں اور آخرت سے وہ خود ہی غافل ہیں

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

جانتے ہیں آنکھوں کے سامنے کی دنیوی زندگی اور وہ آخرت سے پورے بے خبر ہیں،

احمد علی Ahmed Ali

دنیا کی زندگی کی ظاہر باتیں جانتے ہیں اور وہ آخرت سے غافل ہی ہیں

أحسن البيان Ahsanul Bayan

وہ تو (صرف) دنیاوی زندگی کے ظاہر کو (ہی) جانتے ہیں اور آخرت سے بالکل ہی بےخبر ہیں (١)۔

٧۔١ یعنی اکثر لوگوں کو دنیاوی معاملات کا خوب علم ہے۔ چنانچہ وہ ان میں تو اپنی چابک دستی اور مہارت فن کا مظاہرہ کرتے ہیں جن کا فائدہ عارضی اور چند روزہ ہے لیکن آخرت کے معاملات سے یہ غافل ہیں جن کا نفع مستقل اور پائیدار ہے۔ یعنی دنیا کے امور کو خوب پہچانتے اور دین سے بےخبر ہیں۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

یہ تو دنیا کی ظاہری زندگی کو جانتے ہیں۔ اور آخرت (کی طرف) سے غافل ہیں

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

وه تو (صرف) دنیوی زندگی کے ﻇاہر کو (ہی) جانتے ہیں اور آخرت سے تو بالکل ہی بےخبر ہیں

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

یہ لوگ صرف دنیاوی زندگی کے ظاہر کو جانتے ہیں اور آخرت سے بالکل غافل ہیں۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

یہ لوگ صرف زندگانی دنیا کے ظاہر کو جانتے ہیں اور آخرت کی طرف سے بالکل غافل ہیں

طاہر القادری Tahir ul Qadri

وہ (تو) دنیا کی ظاہری زندگی کو (ہی) جانتے ہیں اور وہ لوگ آخرت (کی حقیقی زندگی) سے غافل و بے خبر ہیں،