Skip to main content

اِنَّ الْاِنْسَانَ لَفِىْ خُسْرٍۙ

إِنَّ
بیشک
ٱلْإِنسَٰنَ
تمام انسان
لَفِى
البتہ میں
خُسْرٍ
نقصان میں ہیں/ خسارے میں ہیں

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

انسان درحقیقت بڑے خسارے میں ہے

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

انسان درحقیقت بڑے خسارے میں ہے

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

بیشک آدمی ضرور نقصان میں ہے

احمد علی Ahmed Ali

بے شک انسان گھاٹے میں ہے

أحسن البيان Ahsanul Bayan

بیشک (بالیقین) انسان سراسر نقصان میں ہے (١)

٢۔١ یہ جواب قسم ہے۔ انسان کا خسارہ اور ہلاکت واضح ہے کہ جب تک وہ زندہ رہتا ہے، اس کے شب و روز سخت محنت کرتے ہوئے گزرتے ہیں، پھر جب موت سے ہمکنار ہوتا ہے تو موت کے بعد آرام اور راحت نہیں ہوتی، بلکہ وہ جہنم کا ایندھن بنتا ہے۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

کہ انسان نقصان میں ہے

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

بیشک (بالیقین) انسان سرتا سر نقصان میں ہے

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

یقیناً (ہر) انسان گھاٹے میں ہے۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

بے شک انسان خسارہ میں ہے

طاہر القادری Tahir ul Qadri

بیشک انسان خسارے میں ہے (کہ وہ عمرِ عزیز گنوا رہا ہے)،