Skip to main content

قَالَ لَهُمْ مُّوْسٰۤى اَلْقُوْا مَاۤ اَنْتُمْ مُّلْقُوْنَ

قَالَ
کہا
لَهُم
ان سے
مُّوسَىٰٓ
موسیٰ نے
أَلْقُوا۟
ڈالو
مَآ
جو
أَنتُم
ہو تم
مُّلْقُونَ
ڈالنے والے

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

موسیٰؑ نے کہا "پھینکو جو تمہیں پھینکنا ہے"

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

موسیٰؑ نے کہا "پھینکو جو تمہیں پھینکنا ہے"

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

موسیٰ نے ان سے فرمایا ڈالو جو تمہیں ڈالنا ہے

احمد علی Ahmed Ali

موسیٰ نے ان سے کہا ڈالو جو تم ڈالتے ہو

أحسن البيان Ahsanul Bayan

(حضرت) موسیٰ (علیہ السلام) نے جادوگروں سے فرمایا جو کچھ تمہیں ڈالنا ہے ڈال دو (١)۔

٤٣۔١ حضرت موسیٰ علیہ کی طرف سے جادوگروں کو پہلے اپنے کرتب دکھانے کے لئے کہنے میں یہ حکمت معلوم ہوتی ہے کہ ایک تو ان پر یہ واضح ہو جائے کہ اللہ کے پیغمبر اتنی بڑی تعداد میں نامی گرامی جادوگروں کے اجتماع اور ان کی ساحرانہ شعبدہ بازیوں سے خوف زدہ نہیں ہے۔ دوسرا یہ مقصد بھی ہو سکتا ہے کہ جب اللہ کے حکم سے یہ ساری شعبدہ بازیاں آن واحد میں ختم ہو جائیں گی تو دیکھنے والوں پر اس کے اچھے اثرات مرتب ہونگے اور شاید اس طرح زیادہ لوگ اللہ پر ایمان لے آئیں۔ چنانچہ ایسا ہی ہوا، بلکہ جادوگر ہی سب سے پہلے ایمان لے آئے، جیسا کہ آگے آرہا ہے۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

موسیٰ نے ان سے کہا کہ جو چیز ڈالنی چاہتے ہو، ڈالو

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

(حضرت) موسیٰ (علیہ السلام) نے جادوگروں سے فرمایا جو کچھ تمہیں ڈالنا ہے ڈال دو

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

موسیٰ نے ان سے کہا کہ تم پھینکو جو کچھ تمہیں پھینکنا ہے۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

موسیٰ نے ان لوگوں سے کہا کہ جو کچھ پھینکنا چاہتے ہو پھینکو

طاہر القادری Tahir ul Qadri

موسٰی (علیہ السلام) نے ان (جادوگروں سے) فرمایا: تم وہ (جادو کی) چیزیں ڈال دو جو تم ڈالنے والے ہو،