Skip to main content

وَمَنْ كَانَ فِىْ هٰذِهٖۤ اَعْمٰى فَهُوَ فِى الْاٰخِرَةِ اَعْمٰى وَاَضَلُّ سَبِيْلًا

وَمَن
اور جو کوئی
كَانَ
ہوا
فِى
میں
هَٰذِهِۦٓ
اس دنیا
أَعْمَىٰ
اندھا
فَهُوَ
تو وہ
فِى
میں
ٱلْءَاخِرَةِ
آخرت میں
أَعْمَىٰ
اندھا ہوگا
وَأَضَلُّ
اور سب سے زیادہ بھٹکا ہوا
سَبِيلًا
راستے کے اعتبار سے

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

اور جو اِس دنیا میں اندھا بن کر رہا وہ آخرت میں بھی اندھا ہی رہے گا بلکہ راستہ پانے میں اندھے سے بھی زیادہ ناکام

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

اور جو اِس دنیا میں اندھا بن کر رہا وہ آخرت میں بھی اندھا ہی رہے گا بلکہ راستہ پانے میں اندھے سے بھی زیادہ ناکام

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

اور جو اس زندگی میں اندھا ہو وہ آخرت میں اندھا ہے اور اوربھی زیادہ گمراہ،

احمد علی Ahmed Ali

اور جو کوئی اس جہان میں اندھا رہا تو وہ آخرت میں بھی اندھا ہو گا اور راستہ سے بہت دور ہٹا ہوا

أحسن البيان Ahsanul Bayan

اور جو کوئی اس جہان میں اندھا رہا، وہ آخرت میں بھی اندھا اور راستے سے بہت ہی بھٹکا ہوا رہے گا (١)۔

٧٢۔١ اَ عْمَیٰ (اندھا) سے مراد دل کا اندھا ہے یعنی جو دنیا میں حق کے دیکھنے، سمجھنے اور اسے قبول کرنے سے محروم رہا، وہ آخرت میں اندھا، اور رب کے خصوصی فضل و کرم سے محروم رہے گا۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

اور جو شخص اس (دنیا) میں اندھا ہو وہ آخرت میں بھی اندھا ہوگا۔ اور (نجات کے) رستے سے بہت دور

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

اور جو کوئی اس جہان میں اندھا رہا، وه آخرت میں بھی اندھا اور راستے سے بہت ہی بھٹکا ہوا رہے گا

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

اور جو کوئی اس دنیا میں اندھا بنا رہا وہ آخرت میں بھی اندھا ہی ہوگا اور بڑا راہ گم کردہ ہوگا۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

اور جو اسی دنیا میں اندھا ہے وہ قیامت میں بھی اندھا اور بھٹکا ہوا رہے گا

طاہر القادری Tahir ul Qadri

اور جو شخص اس (دنیا) میں (حق سے) اندھا رہا سو وہ آخرت میں بھی اندھا اور راہِ (نجات) سے بھٹکا رہے گا،