Skip to main content

ذِكْرُ رَحْمَتِ رَبِّكَ عَـبْدَهٗ زَكَرِيَّا ۚ

ذِكْرُ
ذکر ہے
رَحْمَتِ
رحمت کا
رَبِّكَ
تیرے رب کی
عَبْدَهُۥ
جو اس کے بندے
زَكَرِيَّآ
زکریا پر تھی

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

ذکر ہے اُس رحمت کا جو تیرے رب نے اپنے بندے زکریاؑ پر کی تھی

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

ذکر ہے اُس رحمت کا جو تیرے رب نے اپنے بندے زکریاؑ پر کی تھی

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

یہ مذکور ہے تیرے رب کی اس رحمت کا جو اس نے اپنے بندہ زکریا پر کی،

احمد علی Ahmed Ali

یہ تیرے رب کی مہربانی کا ذکر ہے جو اس کے بندے زکریا پر ہوئی

أحسن البيان Ahsanul Bayan

یہ ہے تیرے پروردگار کی اس مہربانی کا ذکر جو اس نے اپنے بندے زکریا (١) پر کی تھی۔

٢۔١ حضرت زکر یا علیہ السلام، انبیائے بنی اسرائیل میں سے ہیں۔ یہ بڑھئی تھے اور یہی پیشہ ان کا ذریعہ آمدنی تھا (صحیح مسلم)

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

(یہ) تمہارے پروردگار کی مہربانی کا بیان (ہے جو اس نے) اپنے بندے زکریا پر (کی تھی)

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

یہ ہے تیرے پروردگار کی اس مہربانی کا ذکر جو اس نے اپنے بندے زکریا پر کی تھی

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

(اے رسول (ص)) آپ کے پروردگار نے اپنے (خاص) بندے زکریا(ع) پر جو (خاص) رحمت کی تھی یہ اس کا تذکرہ ہے۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

یہ زکریا کے ساتھ تمہارے پروردگار کی مہربانی کا ذکر ہے

طاہر القادری Tahir ul Qadri

یہ آپ کے رب کی رحمت کا ذکر ہے (جو اس نے) اپنے (برگزیدہ) بندے زکریا (علیہ السلام) پر (فرمائی تھی)،