Skip to main content
ARBNDEENIDTRUR
bismillah

كٓهٰيٰـعٓـصٓ ۚ

ک، ہ، ی، ع، ص

تفسير

ذِكْرُ رَحْمَتِ رَبِّكَ عَـبْدَهٗ زَكَرِيَّا ۚ

ذِكْرُ
ذکر ہے
رَحْمَتِ رَبِّكَ
تیرے رب کی رحمت کا
عَبْدَهٗ
جو اس کے بندے
زَكَرِيَّا
زکریا پر تھی

ذکر ہے اُس رحمت کا جو تیرے رب نے اپنے بندے زکریاؑ پر کی تھی

تفسير

اِذْ نَادٰى رَبَّهٗ نِدَاۤءً خَفِيًّا

اِذْ نَادٰى
جب اس نے پکارا
رَبَّهٗ
اپنے رب کو
نِدَاۗءً
پکارنا
خَفِيًّا
خفیہ۔ چپکے چپکے

جبکہ اُس نے اپنے رب کو چپکے چپکے پکارا

تفسير

قَالَ رَبِّ اِنِّىْ وَهَنَ الْعَظْمُ مِنِّىْ وَاشْتَعَلَ الرَّأْسُ شَيْبًا وَّلَمْ اَكُنْۢ بِدُعَاۤٮِٕكَ رَبِّ شَقِيًّا

قَالَ رَبِّ
کہا اے میرے رب
اِنِّىْ وَهَنَ
بیشک میں کمزور ہوگئیں
الْعَظْمُ مِنِّيْ
ہڈیاں میری۔ مجھ سے
وَاشْتَعَلَ الرَّاْسُ
اور بھڑک اٹھا سر
شَيْبًا
بڑھاپے سے
وَّلَمْ اَكُنْۢ
اور نہیں ہوں میں
بِدُعَاۗىِٕكَ
ساتھ تیری دعا کے
رَبِّ
اے میرے رب
شَقِيًّا
نامراد

اُس نے عرض کیا "اے پروردگار، میری ہڈیاں تک گھل گئی ہیں اور سر بڑھاپے سے بھڑک اٹھا ہے اے پروردگار، میں کبھی تجھ سے دعا مانگ کر نامراد نہیں رہا

تفسير

وَاِنِّىْ خِفْتُ الْمَوَالِىَ مِنْ وَّرَاۤءِىْ وَكَانَتِ امْرَاَتِىْ عَاقِرًا فَهَبْ لِىْ مِنْ لَّدُنْكَ وَلِيًّا ۙ

وَاِنِّىْ
اور بیشک میں
خِفْتُ الْمَوَالِيَ
میں ڈرتا ہوں اپنے بھائی بندوں سے۔ قرابت داروں سے
مِنْ
سے
وَّرَاۗءِيْ
اپنے پیچھے
وَكَانَتِ امْرَاَتِيْ
اور ہے میری بیوی
عَاقِرًا
بانجھ
فَهَبْ لِيْ
پس عطا کر مجھ کو
مِنْ لَّدُنْكَ
اپنے پا س سے
وَلِيًّا
ایک وارث

مجھے اپنے پیچھے اپنے بھائی بندوں کی برائیوں کا خوف ہے، اور میری بیوی بانجھ ہے تو مجھے اپنے فضلِ خاص سے ایک وارث عطا کر دے

تفسير

يَّرِثُنِىْ وَيَرِثُ مِنْ اٰلِ يَعْقُوْبَ ۖ وَاجْعَلْهُ رَبِّ رَضِيًّا

يَّرِثُنِيْ
جو وارث ہو میرا
وَيَرِثُ مِنْ اٰلِ يَعْقُوْبَ
اور وارث ہو آل یعقوب میں سے
ڰ وَاجْعَلْهُ
اور بنادے اس کو
رَبِّ
اے میرے رب
رَضِيًّا
پسندیدہ

جو میرا وارث بھی ہو اور آلِ یعقوب کی میراث بھی پائے، اور اے پروردگار، اُس کو ایک پسندیدہ انسان بنا"

تفسير

يٰزَكَرِيَّاۤ اِنَّا نُبَشِّرُكَ بِغُلٰمِ ِسْمُهٗ يَحْيٰى ۙ لَمْ نَجْعَلْ لَّهٗ مِنْ قَبْلُ سَمِيًّا

يٰزَكَرِيَّآ
اے زکریا
اِنَّا نُبَشِّرُكَ
بیشک ہم خوش خبری دیتے ہیں تجھ کو
بِغُلٰمِۨ
ایک بیٹے کی
اسْمُهٗ يَحْــيٰى
اس کا نام یحییٰ ہے
ۙ لَمْ
نہیں
نَجْعَلْ لَّهٗ
ہم نے بنایا اس کے لیے
مِنْ قَبْلُ
اس سے پہلے
سَمِيًّا
ہم نام

(جواب دیا گیا) "اے زکریاؑ، ہم تجھے ایک لڑکے کی بشارت دیتے ہیں جس کا نام یحییٰؑ ہو گا ہم نے اِس نام کا کوئی آدمی اس سے پہلے پیدا نہیں کیا"

تفسير

قَالَ رَبِّ اَنّٰى يَكُوْنُ لِىْ غُلٰمٌ وَّكَانَتِ امْرَاَتِىْ عَاقِرًا وَّقَدْ بَلَـغْتُ مِنَ الْـكِبَرِ عِتِيًّا

قَالَ رَبِّ
کہا اے میرے رب
اَنّٰى يَكُوْنُ
کیونکر۔ کہاں سے۔ کسے ہوسکتا ہے
لِيْ
میرے لیے
غُلٰمٌ
بیٹا
وَّكَانَتِ امْرَاَتِيْ
جبکہ ہے میری بیوی
عَاقِرًا
بانجھ
وَّقَدْ
اور تحقیق
بَلَغْتُ
میں پہنچا ہوا ہوں
مِنَ
سے
الْكِبَرِ
بڑھاپے میں
عِتِيًّا
حد سے باہر

عرض کیا، "پروردگار، بھلا میرے ہاں کیسے بیٹا ہوگا جبکہ میری بیوی بانجھ ہے اور میں بوڑھا ہو کر سوکھ چکا ہوں؟"

تفسير

قَالَ كَذٰلِكَۚ قَالَ رَبُّكَ هُوَ عَلَىَّ هَيِّنٌ وَّقَدْ خَلَقْتُكَ مِنْ قَبْلُ وَلَمْ تَكُ شَيْـًٔـا

قَالَ كَذٰلِكَ
فرمایا اسی طرح
ۚ قَالَ رَبُّكَ
کہا تیرے رب نے
هُوَ عَلَيَّ
وہ مجھ پر
هَيِّنٌ
بہت آسان ہے
وَّقَدْ خَلَقْتُكَ
اور تحقیق میں نے پیدا کیا تھا تجھ کو
مِنْ قَبْلُ
اس سے پہلے
وَلَمْ تَكُ شَـيْـــــًٔـا
اور نہ تھا تو کچھ بھی

جواب ملا "ایسا ہی ہو گا تیرا رب فرماتا ہے کہ یہ تو میرے لیے ایک ذرا سی بات ہے، آخر اس سے پہلے میں تجھے پیدا کر چکا ہوں جب کہ تو کوئی چیز نہ تھا"

تفسير

قَالَ رَبِّ اجْعَلْ لِّىْۤ اٰيَةً ۗ قَالَ اٰيَتُكَ اَ لَّا تُكَلِّمَ النَّاسَ ثَلٰثَ لَيَالٍ سَوِيًّا

قَالَ رَبِّ
کہا اے میرے رب
اجْعَلْ لِّيْٓ اٰيَةً
بنا میرے لیے ایک نشانی
ۭ قَالَ
کہا
اٰيَتُكَ
نشانی تیری
اَلَّا
کہ نہ
تُكَلِّمَ النَّاسَ
تو کلام کرے گا لوگوں سے
ثَلٰثَ
تین
لَيَالٍ
رات
سَوِيًّا
اچھا بھلا ہوئے بھی

زکریاؑ نے کہا، "پروردگار، میرے لیے کوئی نشانی مقرر کر دے" فرمایا "تیرے لیے نشانی یہ ہے کہ تو پیہم تین دن لوگوں سے بات نہ کر سکے"

تفسير
کے بارے میں معلومات :
مریم
القرآن الكريم:مريم
آية سجدہ (سجدة):58
سورۃ کا نام (latin):Maryam
سورہ نمبر:19
کل آیات:98
کل کلمات:780
کل حروف:3700
کل رکوعات:6
مقام نزول:مکہ مکرمہ
ترتیب نزولی:44
آیت سے شروع:2250