Skip to main content

وَّرَفَعْنٰهُ مَكَانًا عَلِيًّا

وَرَفَعْنَٰهُ
اور بلند کیا ہم نے اس کو
مَكَانًا
جگہ پر۔ مقام پر
عَلِيًّا
بلند (جگہ پر۔ مقام پر)

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

اور اسے ہم نے بلند مقام پر اٹھایا تھا

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

اور اسے ہم نے بلند مقام پر اٹھایا تھا

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

اور ہم نے اسے بلند مکان پر اٹھالیا

احمد علی Ahmed Ali

اور ہم نے اسے بلند مرتبہ پر پہنچایا

أحسن البيان Ahsanul Bayan

ہم نے اسے بلند مقام پر اٹھا لیا (١)

٥٧۔١ حضرت ادریس علیہ السلام، کہتے ہیں کہ حضرت آدم علیہ السلام کے بعد پہلے نبی تھے اور حضرت نوح علیہ السلام کے یا ان کے والد کے دادا تھے، انہوں نے ہی سب سے پہلے کپڑے سیئے، بلندی مکان سے مراد؟ بعض مفسرین نے اس کا مفہوم رُفِعَ اِلَی السَّمَآءِ سمجھا ہے کہ حضرت عیسیٰ علیہ السلام کی طرح انہیں بھی آسمان پر اٹھا لیا گیا لیکن قرآن کے الفاظ اس مفہوم کے لئے صاف نہیں ہیں اور کسی صحیح حدیث میں بھی یہ بیان نہیں ہوا۔ البتہ اسرائیلی روایات میں ان کے آسمان پر اٹھائے جانے کا ذکر ملتا ہے جو اس مفہوم کے اثبات کے لئے کافی نہیں۔ اس لئے زیادہ صحیح بات یہی معلوم ہوتی ہے کہ اس سے مراد مرتبے کی وہ بلندی ہے جو نبوت سے سرفراز کر کے انہیں عطا کی گئی۔ واللہ اعلم

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

اور ہم نے ان کو اونچی جگہ اُٹھا لیا تھا

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

ہم نےاسے بلند مقام پر اٹھا لیا

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

اور ہم نے انہیں بڑے ہی اونچے مقام تک بلند کیا تھا۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

اور ہم نے ان کو بلند جگہ تک پہنچادیا ہے

طاہر القادری Tahir ul Qadri

اور ہم نے انہیں بلند مقام پر اٹھا لیا تھا،