Skip to main content

فَمَنِ ابْتَغٰى وَرَاۤءَ ذٰلِكَ فَاُولٰۤٮِٕكَ هُمُ الْعٰدُوْنَ ۚ

فَمَنِ
تو جو کوئی
ٱبْتَغَىٰ
تلاش کرے۔ چاہے
وَرَآءَ
اس کے علاوہ
ذَٰلِكَ
تو یہی
فَأُو۟لَٰٓئِكَ
لوگ
هُمُ
وہ
ٱلْعَادُونَ
زیادتی کرنے والے ہیں

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

البتہ جو اُس کے علاوہ کچھ اور چاہیں وہی زیادتی کرنے والے ہیں

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

البتہ جو اُس کے علاوہ کچھ اور چاہیں وہی زیادتی کرنے والے ہیں

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

تو جو ان دو کے سوا کچھ اور چاہے وہی حد سے بڑھنے والے ہیں

احمد علی Ahmed Ali

پس جو شخص اس کے علاوہ طلب گار ہو تو وہی حد سے نکلنے والے ہیں

أحسن البيان Ahsanul Bayan

جو اس کے سوا کچھ اور چاہیں وہی حد سے تجاوز کر جانے والے ہیں (١)

٧۔١ اس سے معلوم ہوا کہ متعہ کی اسلام میں قطعًا اجازت نہیں اور جنسی خواہش کی تسکین کے لئے صرف دو ہی جائز طریقے ہیں۔ بیوی سے مباشرت کر کے یا لونڈی سے ہم بستری کر کے۔ بلکہ اب صرف بیوی ہی اس کام کے لئے رہ گئی ہے کیونکہ اصطلاحی لونڈی کا وجود فی الحال ختم ہے جب کبھی حالات نے دوبارہ وجود پذیر کیا تو بیوی ہی کی طرح اس سے مباشرت جائز ہوگی۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

اور جو ان کے سوا اوروں کے طالب ہوں وہ (خدا کی مقرر کی ہوئی حد سے) نکل جانے والے ہیں

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

جو اس کے سوا کچھ اور چاہیں وہی حد سے تجاوز کرجانے والے ہیں

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

اور جو اس (دو طرح) کے علاوہ کوئی خواہش کرے تو ایسے ہی لوگ (حد سے) تجاوز کرنے والے ہیں۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

پھر اس کے علاوہ جو کوئی اور راستہ تلاش کرے گا وہ زیادتی کرنے والا ہوگا

طاہر القادری Tahir ul Qadri

پھر جو شخص ان (حلال عورتوں) کے سوا کسی اور کا خواہش مند ہوا تو ایسے لوگ ہی حد سے تجاوز کرنے والے (سرکش) ہیں،