Skip to main content

اِنَّ هٰذَا لَرِزْقُنَا مَا لَهٗ مِنْ نَّـفَادٍ ۚ

إِنَّ
بیشک
هَٰذَا
یہ
لَرِزْقُنَا
البتہ ہمارا رزق ہے
مَا
نہیں ہے
لَهُۥ
اس کے لئے
مِن
نَّفَادٍ
کم ہونا/ ختم ہونا

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

یہ ہمارا رزق ہے جو کبھی ختم ہونے والا نہیں

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

یہ ہمارا رزق ہے جو کبھی ختم ہونے والا نہیں

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

بیشک یہ ہمارا رزق ہے کہ کبھی ختم نہ ہوگا

احمد علی Ahmed Ali

بے شک یہ ہمارا رزق ہے جو کبھی ختم نہیں ہوگا

أحسن البيان Ahsanul Bayan

بیشک روزیاں (خاص) ہمارا عطیہ ہیں جن کا کبھی خاتمہ ہی نہیں (١)

٥٤۔١ رزق، بمعنی عطیہ ہے اور ھٰذَا سے ہر قسم کی مذکور نعمتیں اور وہ اکرام و اعزاز مراد ہے جن سے اہل جنت بہرہ یاب ہوں گے۔ نفاد کے معنی خاتمے کے ہیں یہ نعمتیں بھی غیر فانی ہوں گی اور اعزاز و اکرام بھی دائمی۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

یہ ہمارا رزق ہے جو کبھی ختم نہیں ہوگا

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

بیشک روزیاں (خاص) ہمارا عطیہ ہیں جن کا کبھی خاتمہ ہی نہیں

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

یہ ہمارا (خاص) رزق ہے جو ختم ہونے والا نہیں ہے۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

یہ ہمارا رزق ہے جو ختم ہونے والا نہیں ہے

طاہر القادری Tahir ul Qadri

بیشک یہ ہماری بخشش ہے اسے کبھی بھی ختم نہیں ہونا،