Skip to main content

فَبِاَىِّ اٰلَاۤءِ رَبِّكُمَا تُكَذِّبٰنِ

فَبِأَىِّ
تو ساتھ کون سی
ءَالَآءِ
نعمتوں کے
رَبِّكُمَا
اپنے رب کی
تُكَذِّبَانِ
تم دونوں جھٹلاؤ گے

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

پس اے جن و انس، تم اپنے رب کی کن کن نعمتوں کو جھٹلاؤ گے؟

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

پس اے جن و انس، تم اپنے رب کی کن کن نعمتوں کو جھٹلاؤ گے؟

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

تو اے جن و انس! تم دونوں اپنے رب کی کون سی نعمت کو جھٹلاؤ گے

احمد علی Ahmed Ali

پھر تم اپنے رب کی کس کس نعمت کو جھٹلاؤ گے

أحسن البيان Ahsanul Bayan

پس (اے انسانو اور جنو!) تم اپنے پروردگار کی کس کس نعمت کو جھٹلاؤ گے؟ (١)

١٣۔١ یہ انسانوں اور جنوں دونوں سے خطاب ہے اللہ تعالٰی اپنی نعمتیں گنوا کر ان سے پوچھ رہا ہے یہ تکرار اس شخص کی طرح ہے جو کسی پر مسلسل احسان کرے لیکن وہ اس کے احسان کا منکر ہو، جیسے کہے، میں نے تیرا فلاں کام کیا، کیا تو انکار کرتا ہے؟ فلاں چیز تجھے دی، کیا تجھے یاد نہیں؟ تجھ پر فلاں احسان کیا، کیا تجھے ہمارا ذرا خیال نہیں؟ (فتح القدیر)

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

تو (اے گروہ جن وانس) تم اپنے پروردگار کی کون کون سی نعمت کو جھٹلاؤ گے؟

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

پس (اے انسانو اور جنو!) تم اپنے پروردگار کی کس کس نعمت کو جھٹلاؤ گے؟

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

سو (اے جن و انس) تم اپنے پروردگار کی کن کن نعمتوں کو جھٹلاؤ گے؟

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

اب تم دونوں اپنے رب کی کس کس نعمت کا انکار کرو گے

طاہر القادری Tahir ul Qadri

پس (اے گروہِ جنّ و انسان!) تم دونوں اپنے رب کی کن کن نعمتوں کو جھٹلاؤ گے،