Skip to main content

مُتَّكِــِٕيْنَ عَلٰى رَفْرَفٍ خُضْرٍ وَّعَبْقَرِىٍّ حِسَانٍۚ

مُتَّكِـِٔينَ
تکیہ لگائے ہوئے ہوں گے
عَلَىٰ
پر
رَفْرَفٍ
مسندوں
خُضْرٍ
سبز
وَعَبْقَرِىٍّ
اور نادر
حِسَانٍ
نفیس

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

وہ جنتی سبز قالینوں اور نفیس و نادر فرشوں پر تکیے لگا کے بیٹھیں گے

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

وہ جنتی سبز قالینوں اور نفیس و نادر فرشوں پر تکیے لگا کے بیٹھیں گے

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

تکیہ لگائے ہوئے سبز بچھونوں اور منقش خوبصورت چاندنیوں پر،

احمد علی Ahmed Ali

قالینوں پر تکیہ لگائے ہوئے ہوں گے جو سبز اور نہایت قیمتی نفیس ہوں گے

أحسن البيان Ahsanul Bayan

سبز مسندوں اور عمدہ فرشوں پر تکیہ لگائے ہوئے ہوں گے (١)

٧٦۔١ مطلب یہ ہے کہ جنتی ایسے تختوں پر بیٹھے ہوں گے جس پر سبز رنگ کی مسندیں، غالیچے اور اعلٰی قسم کے خوب صورت منقش فرش بچھے ہوں گے۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

سبز قالینوں اور نفیس مسندوں پر تکیہ لگائے بیٹھے ہوں گے

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

سبز مسندوں اور عمده فرشوں پر تکیہ لگائے ہوئے ہوں گے

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

وہ (جنتی لوگ) سبز رنگ کے بچھونوں اور خوبصورت گدوں پر تکیہ لگائے بیٹھے ہوں گے۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

وہ لوگ سبز قالینوں اور بہترین مسندوں پر ٹیک لگائے بیٹھے ہوں گے

طاہر القادری Tahir ul Qadri

(اہلِ جنت) سبز قالینوں پر اور نادر و نفیس بچھونوں پر تکیے لگائے (بیٹھے) ہوں گے،