Skip to main content

اَبْصَارُهَا خَاشِعَةٌ ۘ

أَبْصَٰرُهَا
نگاہیں ان کی
خَٰشِعَةٌ
دبی ہوئی ہوں گی/ سہمی ہوئی ہوں گی

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

نگاہیں اُن کی سہمی ہوئی ہوں گی

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

نگاہیں اُن کی سہمی ہوئی ہوں گی

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

آنکھ اوپر نہ اٹھا سکیں گے

احمد علی Ahmed Ali

ان کی آنکھیں جھکی ہوئی ہوں گی

أحسن البيان Ahsanul Bayan

جس کی نگاہیں نیچی ہونگی (١)

٩۔١ دہشت زدہ لوگوں کی نظریں بھی (مجرموں کی طرح) جھکی ہوئی ہوں گی۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

اور آنکھیں جھکی ہوئی

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

جن کی نگاہیں نیچی ہوں گی

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

ان کی آنکھیں (شدتِ خوف سے) جھکی ہوئی ہوں گی۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

آنکھیں خوف سے جھکیِ ہوں گی

طاہر القادری Tahir ul Qadri

ان کی آنکھیں (خوف و ہیبت سے) جھکی ہوں گی،