Skip to main content

فَعَّالٌ لِّمَا يُرِيْدُ ۗ

فَعَّالٌ
کہ ڈالنے والا ہے/ کر گزرنے والا ہے
لِّمَا
واسطے اس کے جو
يُرِيدُ
وہ چاہتا ہے

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

اور جو کچھ چاہے کر ڈالنے والا ہے

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

اور جو کچھ چاہے کر ڈالنے والا ہے

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

ہمیشہ جو چاہے کہ لینے والا،

احمد علی Ahmed Ali

جو چاہے کرنے والا

أحسن البيان Ahsanul Bayan

جو چاہے اسے کر گزرنے والا ہے (١)

١٦۔١ یعنی وہ جو چاہے، کر گزرتا ہے اس کے حکم اور مشیت کو ٹالنے والا کوئی نہیں ہے نہ اسے کوئی پوچھنے والا ہی ہے۔ حضرت ابو بکر سے ان کے مرض الموت میں کسی نے پوچھا کیا کسی طبیب نے آپ کو دیکھا ہے انہوں نے فرمایا کہ ہاں، پوچھا اس نے کیا کہا، انی فعال لما ارید، میں جو چاہوں کروں، میرے معاملے میں کوئی دخل دینے والا نہیں۔ (ابن کثیر) مطلب یہ تھا کہ معاملہ اب طبیبوں کے ہاتھ میں نہیں رہا میرا آخری وقت آ گیا ہے اور اللہ ہی اب میرا طبیب ہے جس کی مشییت کو ٹالنے کی کسی کے اندر طاقت نہیں۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

جو چاہتا ہے کر دیتا ہے

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

جو چاہے اسے کر گزرنے واﻻ ہے

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

وہ جو چاہتا ہے وہ کر گزرتا ہے۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

جو چاہتا ہے کرسکتا ہے

طاہر القادری Tahir ul Qadri

وہ جو بھی ارادہ فرماتا ہے (اسے) خوب کر دینے والا ہے،