Skip to main content

وَمَا كَانَ رَبُّكَ لِيُهْلِكَ الْقُرٰى بِظُلْمٍ وَّاَهْلُهَا مُصْلِحُوْنَ

وَمَا
اور نہیں
كَانَ
ہے
رَبُّكَ
تیرارب
لِيُهْلِكَ
کہ ہلاک کردے
ٱلْقُرَىٰ
بستیوں کو
بِظُلْمٍ
ساتھ ظلم کے
وَأَهْلُهَا
جبکہ اس کے رہنے والے
مُصْلِحُونَ
اصلاح کرنے والے ہوں

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

تیرا رب ایسا نہیں ہے کہ بستیوں کو ناحق تباہ کر دے حالانکہ ان کے باشندے اصلاح کرنے والے ہوں

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

تیرا رب ایسا نہیں ہے کہ بستیوں کو ناحق تباہ کر دے حالانکہ ان کے باشندے اصلاح کرنے والے ہوں

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

اور تمہارا رب ایسا نہیں کہ بستیوں کو بے وجہ ہلاک کردے اور ان کے لوگ اچھے ہوں،

احمد علی Ahmed Ali

اور تیرا رب ہرگز ایسا نہیں جو بستیوں کو زبردستی ہلاک کر دے اور وہاں کے لوگ نیک ہوں

أحسن البيان Ahsanul Bayan

آپ کا رب ایسا نہیں کہ کسی بستی کو ظلم سے ہلاک کر دے اور وہاں کے لوگ نیکوکار ہوں۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

اور تمہارا پروردگار ایسا نہیں ہے کہ بستیوں کو جب کہ وہاں کے باشندے نیکوکار ہوں ازراہِ ظلم تباہ کردے

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

آپ کا رب ایسا نہیں کہ کسی بستی کو ﻇلم سے ہلاک کر دے اور وہاں کے لوگ نیکو کار ہوں

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

اور آپ کا پروردگار ایسا نہیں ہے کہ وہ ظلم کرکے (ناحق) بستیوں کو ہلاک کر دے جبکہ ان کے باشندے نیکوکار اور اصلاح کرنے والے ہوں۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

اور آپ کے پروردگار کا کام یہ نہیں ہے کہ کسی قریہ کو ظلم کرکے تباہ کردے جب کہ اس کے رہنے والے اصلاح کرنے والے ہوں

طاہر القادری Tahir ul Qadri

اور آپ کا رب ایسا نہیں کہ وہ بستیوں کو ظلمًا ہلاک کر ڈالے درآنحالیکہ اس کے باشندے نیکوکار ہوں،