Skip to main content
ARBNDEENIDTRUR
bismillah

الٓرٰ ۗ كِتٰبٌ اُحْكِمَتْ اٰيٰـتُهٗ ثُمَّ فُصِّلَتْ مِنْ لَّدُنْ حَكِيْمٍ خَبِيْرٍۙ

كِتٰبٌ
پختہ کی گئیں
اُحْكِمَتْ
آیات اس کی
اٰيٰتُهٗ
پھر کھول کھول کر بیان کی گئیں
ثُمَّ فُصِّلَتْ
اس ہستی کی طرف سے
مِنْ لَّدُنْ
حکمت والی
حَكِيْمٍ
باخبر
خَبِيْرٍ
باخبر

ا ل ر فرمان ہے، جس کی آیتیں پختہ اور مفصل ارشاد ہوئی ہیں، ایک دانا اور باخبر ہستی کی طرف سے

تفسير

اَ لَّا تَعْبُدُوْۤا اِلَّا اللّٰهَ ۗ اِنَّنِىْ لَـكُمْ مِّنْهُ نَذِيْرٌ وَّبَشِيْرٌ ۙ

اَلَّا
کہ نہ
تَعْبُدُوْٓا
تم عبادت کرو
اِلَّا اللّٰهَ ۭ
مگر اللہ کی
اِنَّنِيْ لَكُمْ
بیشک میں تمہارے لیے
مِّنْهُ
اس کی طرف سے
نَذِيْرٌ وَّبَشِيْرٌ
خبردار کرنے والا ہوں اور بشارت دینے والا ہوں

کہ تم بندگی نہ کرو مگر صرف اللہ کی میں اُس کی طرف سے تم کو خبردار کرنے والا بھی ہوں اور بشارت دینے والا بھی

تفسير

وَّاَنِ اسْتَغْفِرُوْا رَبَّكُمْ ثُمَّ تُوْبُوْۤا اِلَيْهِ يُمَتِّعْكُمْ مَّتَاعًا حَسَنًا اِلٰۤى اَجَلٍ مُّسَمًّى وَّ يُؤْتِ كُلَّ ذِىْ فَضْلٍ فَضْلَهٗ ۗ وَاِنْ تَوَلَّوْا فَاِنِّىْۤ اَخَافُ عَلَيْكُمْ عَذَابَ يَوْمٍ كَبِيْرٍ

وَّاَنِ
اور یہ کہ
اسْتَغْفِرُوْا
تم بخشش مانگو
رَبَّكُمْ
اپنے رب سے
ثُمَّ
پھر
تُوْبُوْٓا
توبہ کرو
اِلَيْهِ
اس کی طرف
يُمَتِّعْكُمْ
فائدہ دے گا تم کو
مَّتَاعًا
فائدہ
حَسَنًا
اچھا
اِلٰٓى اَجَلٍ
وقت تک
مُّسَمًّى
مقرر
وَّيُؤْتِ
اور دے گا
كُلَّ
ہر
ذِيْ فَضْلٍ
صاحب فضل کو
فَضْلَهٗ ۭ
فضل اپنا
وَاِنْ
اور اگر
تَوَلَّوْا
تم منہ پھیرو گے
فَاِنِّىْٓ
تو بیشک میں
اَخَافُ
میں ڈرتا ہوں
عَلَيْكُمْ
تمہارے بارے میں
عَذَابَ
عذاب سے
يَوْمٍ كَبِيْرٍ
بڑے دن کے

اور یہ کہ تم اپنے رب سے معافی چاہو اور اس کی طرف پلٹ آؤ تو وہ ایک مدت خاص تک تم کو اچھا سامان زندگی دے گا اور ہر صاحب فضل کو اس کا فضل عطا کرے گا لیکن اگر تم منہ پھیرتے ہو تو میں تمہارے حق میں ایک بڑے ہولناک دن کے عذاب سے ڈرتا ہوں

تفسير

اِلَى اللّٰهِ مَرْجِعُكُمْۚ وَهُوَ عَلٰى كُلِّ شَىْءٍ قَدِيْرٌ

اِلَى اللّٰهِ
اللہ کی طرف
مَرْجِعُكُمْ ۚ
لوٹنا ہے تمہارا
وَھُوَ
اور وہ
عَلٰي كُلِّ شَيْءٍ
اوپر ہر چیز کے
قَدِيْرٌ
قادر ہے

تم سب کو اللہ کی طرف پلٹنا ہے اور وہ سب کچھ کرسکتا ہے

تفسير

اَلَاۤ اِنَّهُمْ يَثْنُوْنَ صُدُوْرَهُمْ لِيَسْتَخْفُوْا مِنْهُۗ اَلَا حِيْنَ يَسْتَغْشُوْنَ ثِيَابَهُمْۙ يَعْلَمُ مَا يُسِرُّوْنَ وَمَا يُعْلِنُوْنَۚ اِنَّهٗ عَلِيْمٌۢ بِذَاتِ الصُّدُوْرِ

اَلَآ
خبردار
اِنَّھُمْ
بیشک وہ
يَثْنُوْنَ
موڑتے ہیں
صُدُوْرَھُمْ
اپنے سینے
لِيَسْتَخْفُوْا
تاکہ وہ چھپ سکیں
مِنْهُ ۭ
آپ سے
اَلَا
خبردار
حِيْنَ يَسْتَغْشُوْنَ
جس وقت وہ ڈھانپتے ہیں
ثِيَابَھُمْ ۙ
اپنے کپڑوں کو
يَعْلَمُ
وہ جانتا ہے
مَا يُسِرُّوْنَ
جو وہ چھپاتے ہیں
وَمَا يُعْلِنُوْنَ ۚ
اور جو وہ ظاہر کرتے ہیں
اِنَّهٗ
بیشک وہ
عَلِيْمٌۢ
جاننے والا ہے
بِذَاتِ الصُّدُوْرِ
سینوں کے بھید

دیکھو! یہ لوگ اپنے سینوں کو موڑتے ہیں تاکہ اس سے چھپ جائیں خبردار! جب یہ کپڑوں سے اپنے آپ کو ڈھانپتے ہیں، اللہ ان کے چھپے کو بھی جانتا ہے اور کھلے کو بھی، وہ تو اُن بھیدوں سے بھی واقف ہے جو سینوں میں ہیں

تفسير

وَمَا مِنْ دَاۤ بَّةٍ فِى الْاَرْضِ اِلَّا عَلَى اللّٰهِ رِزْقُهَا وَ يَعْلَمُ مُسْتَقَرَّهَا وَمُسْتَوْدَعَهَاۗ كُلٌّ فِىْ كِتٰبٍ مُّبِيْنٍ

وَمَا
اور نہیں
مِنْ دَاۗبَّةٍ
کوئی جاندار
فِي الْاَرْضِ
زمین میں
اِلَّا
مگر
عَلَي اللّٰهِ
اللہ کے ذمہ ہے
رِزْقُهَا
رزق اس کا
وَيَعْلَمُ
اور وہ جانتا ہے
مُسْتَــقَرَّهَا
ٹھکانہ اس کا
وَمُسْـتَوْدَعَهَا
اور سپرد کرنے کی جگہ اس کی
ۭ كُلٌّ
سب کا سب
فِيْ كِتٰبٍ مُّبِيْنٍ
ایک کھلی کتاب میں ہے

زمین میں چلنے والا کوئی جاندار ایسا نہیں ہے جس کا رزق اللہ کے ذمے نہ ہو اور جس کے متعلق وہ نہ جانتا ہو کہ کہاں وہ رہتا ہے اور کہاں وہ سونپا جاتا ہے، سب کچھ ایک صاف دفتر میں درج ہے

تفسير

وَ هُوَ الَّذِىْ خَلَقَ السَّمٰوٰتِ وَالْاَرْضَ فِىْ سِتَّةِ اَ يَّامٍ وَّكَانَ عَرْشُهٗ عَلَى الْمَاۤءِ لِيَبْلُوَكُمْ اَيُّكُمْ اَحْسَنُ عَمَلًا ۗ وَلَٮِٕنْ قُلْتَ اِنَّكُمْ مَّبْعُوْثُوْنَ مِنْۢ بَعْدِ الْمَوْتِ لَيَـقُوْلَنَّ الَّذِيْنَ كَفَرُوْۤا اِنْ هٰذَاۤ اِلَّا سِحْرٌ مُّبِيْنٌ

وَهُوَ الَّذِيْ
اور وہ اللہ وہ ذات ہے
خَلَقَ
جس نے پیدا کیا
السَّمٰوٰتِ وَالْاَرْضَ
آسمانوں کو اور زمین کو
فِيْ
میں
سِتَّةِ
چھ
اَيَّامٍ
دنوں (چھ دنوں میں)
وَّكَانَ
اور تھا
عَرْشُهٗ
عرش اس کا
عَلَي الْمَاۗءِ
پانی پر
لِيَبْلُوَكُمْ
تاکہ وہ آزمائے تم کو
اَيُّكُمْ
کون سا تم میں سے
اَحْسَنُ عَمَلًا ۭ
زیادہ اچھا ہے عمل کے اعتبار سے
وَلَىِٕنْ
اور البتہ اگر
قُلْتَ
تم کہتے ہو
اِنَّكُمْ
بیشک تم
مَّبْعُوْثُوْنَ
اٹھائے جانے والے ہو
مِنْۢ
سے
بَعْدِ الْمَوْتِ
موت کے بعد
لَيَقُوْلَنَّ
البتہ ضرور کہیں گے
الَّذِيْنَ
وہ لوگ
كَفَرُوْٓا
جنہوں نے کفر کیا
اِنْ ھٰذَآ
نہیں یہ
اِلَّا
مگر
سِحْــرٌ مُّبِيْنٌ
کھلا جادو

اور وہی ہے جس نے آسمانوں اور زمین کو چھ دنوں میں پیدا کیا جبکہ اس سے پہلے اس کا عرش پانی پر تھا تاکہ تم کو آزما کر دیکھے تم میں کون بہتر عمل کرنے والا ہے اب اگر اے محمدؐ، تم کہتے ہو کہ لوگو، مرنے کے بعد تم دوبارہ اٹھائے جاؤ گے، تو منکرین فوراً بول اٹھتے ہیں کہ یہ تو صریح جادو گری ہے

تفسير

وَلَٮِٕنْ اَخَّرْنَا عَنْهُمُ الْعَذَابَ اِلٰۤى اُمَّةٍ مَّعْدُوْدَةٍ لَّيَـقُوْلُنَّ مَا يَحْبِسُهٗۗ اَلَا يَوْمَ يَأْتِيْهِمْ لَـيْسَ مَصْرُوْفًا عَنْهُمْ وَحَاقَ بِهِمْ مَّا كَانُوْا بِهٖ يَسْتَهْزِءُوْنَ

وَلَىِٕنْ
اور البتہ اگر
اَخَّرْنَا
ٹال دیں ہم
عَنْهُمُ الْعَذَابَ
ان سے عذاب کو
اِلٰٓى
تک
اُمَّةٍ
ایک مدت
مَّعْدُوْدَةٍ
گنی چنی ۔ شمار کی ہوئی
لَّيَقُوْلُنَّ
البتہ ضرور کہیں گے
مَا يَحْبِسُهٗ
کس چیز نے روک رکھا ہے اس کو
ۭ اَلَا
خبردار
يَوْمَ
جس دن
يَاْتِيْهِمْ
وہ آجائے گا ان کے پاس
لَيْسَ
نہیں ہے
مَصْرُوْفًا عَنْهُمْ
پھیراجانے والا ان سے
وَحَاقَ بِهِمْ
اور گھیر لے گا ان کو
مَّا كَانُوْا
وہ جو تھے وہ
بِهٖ يَسْتَهْزِءُوْنَ
ساتھ اس کے مذاق اڑاتے

اور اگر ہم ایک خاص مدت تک ان کی سزا کو ٹالتے ہیں تو وہ کہنے لگتے ہیں کہ آخر کس چیز نے اُسے روک رکھا ہے؟ سنو! جس روز اُس سزا کا وقت آگیا تو وہ کسی کے پھیرے نہ پھر سکے گا اور وہی چیز ان کو آ گھیرے گی جس کا وہ مذاق اڑا رہے ہیں

تفسير

وَلَٮِٕنْ اَذَقْنَا الْاِنْسَانَ مِنَّا رَحْمَةً ثُمَّ نَزَعْنٰهَا مِنْهُۚ اِنَّهٗ لَيَـــُٔوْسٌ كَفُوْرٌ

وَلَىِٕنْ
اور البتہ اگر
اَذَقْنَا الْاِنْسَانَ
چکھائیں ہم انسان کو
مِنَّا
اپنی طرف سے
رَحْمَةً
رحمت
ثُمَّ
پھر
نَزَعْنٰهَا
ہم چھین لیں گے اس کو
مِنْهُ
اس سے
ۚ اِنَّهٗ
بیشک وہ
لَيَـــُٔــوْسٌ
البتہ مایوس ہونے والا ہے
كَفُوْرٌ
شدید ناشکرا

اگر کبھی ہم انسان کو اپنی رحمت سے نوازنے کے بعد پھر اس سے محروم کر دیتے ہیں تو وہ مایوس ہوتا ہے اور ناشکری کرنے لگتا ہے

تفسير

وَلَٮِٕنْ اَذَقْنٰهُ نَـعْمَاۤءَ بَعْدَ ضَرَّاۤءَ مَسَّتْهُ لَيَـقُوْلَنَّ ذَهَبَ السَّيِّاٰتُ عَنِّىْ ۗ اِنَّهٗ لَـفَرِحٌ فَخُوْرٌۙ

وَلَىِٕنْ
اور البتہ اگر
اَذَقْنٰهُ
چکھائیں ہم اس کو
نَعْمَاۗءَ
نعمت۔ آسائشیں
بَعْدَ ضَرَّاۗءَ
بعد تکلیف کے
مَسَّتْهُ
پہنچتی تھی اس کو
لَيَقُوْلَنَّ
البتہ ضرور کہے گا
ذَهَبَ
دور ہوگئیں
السَّـيِّاٰتُ
تکلیفیں
عَنِّيْ
مجھ سے
ۭ اِنَّهٗ
بیشک وہ
لَفَرِحٌ
البتہ خوش ہونے والا ہے
فَخُــوْرٌ
بہت فخر کرنے والا ہے

اور اگر اُس مصیبت کے بعد جو اُس پر آئی تھی ہم اسے نعمت کا مزا چکھاتے ہیں تو کہتا ہے میرے تو سارے دلدر پار ہو گئے، پھر وہ پھولا نہیں سماتا اور اکڑنے لگتا ہے

تفسير
کے بارے میں معلومات :
ہود
القرآن الكريم:هود
آية سجدہ (سجدة):-
سورۃ کا نام (latin):Hud
سورہ نمبر:11
کل آیات:123
کل کلمات:1600
کل حروف:9567
کل رکوعات:10
مقام نزول:مکہ مکرمہ
ترتیب نزولی:52
آیت سے شروع:1473