Skip to main content

اِنَّ عِبَادِىْ لَـيْسَ لَـكَ عَلَيْهِمْ سُلْطٰنٌ ۗ وَكَفٰى بِرَبِّكَ وَكِيْلًا

إِنَّ
بیشک
عِبَادِى
میرے بندے
لَيْسَ
نہیں ہے
لَكَ
تیرے لئے
عَلَيْهِمْ
ان پر
سُلْطَٰنٌۚ
کوئی زور
وَكَفَىٰ
اور کافی ہے
بِرَبِّكَ
تیرا رب
وَكِيلًا
کارساز

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

یقیناً میرے بندوں پر تجھے کوئی اقتدار حاصل نہ ہوگا، اور توکل کے لیے تیرا رب کافی ہے"

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

یقیناً میرے بندوں پر تجھے کوئی اقتدار حاصل نہ ہوگا، اور توکل کے لیے تیرا رب کافی ہے"

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

بیشک جو میرے بندے ہیں ان پر تیرا کچھ قابو نہیں، اور تیرا رب کافی ہے کام بنانے کو

احمد علی Ahmed Ali

بے شک میرے بندوں پر تیرا غلبہ نہیں ہو گا اور تیرا رب کافی کارساز ہے

أحسن البيان Ahsanul Bayan

میرے سچے بندوں پر تیرا کوئی قابو اور بس نہیں (١) تیرا رب کار سازی کرنے والا کافی ہے۔(۲)

٦٥۔١ بندوں کی نسبت اپنی طرف کی، بطور شرف اور اعزاز کے ہے، جس سے معلوم ہوا کہ اللہ کے خاص بندوں کو شیطان بہکانے میں ناکام رہتا ہے۔
٦٥۔٢ یعنی جو صحیح معنوں میں اللہ کا بندہ بن جاتا ہے، اسی پر اعتماد اور توکل کرتا ہے تو اللہ بھی اس کا دوست اور کار ساز بن جاتا ہے۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

جو میرے (مخلص) بندے ہیں ان پر تیرا کچھ زور نہیں۔ اور (اے پیغمبر) تمہارا پروردگار کارساز کافی ہے

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

میرے سچے بندوں پر تیرا کوئی قابو اور بس نہیں۔ تیرا رب کارسازی کرنے واﻻ کافی ہے

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

بے شک جو میرے خاص بندے ہیں ان پر تیرا کوئی قابو نہیں ہے اور کارسازی کیلئے آپ کا پروردگار کافی ہے۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

بیشک میرے اصلی بندوں پر تیرا کوئی بس نہیں ہے اور آپ کا پروردگار ان کی نگہبانی کے لئے کافی ہے

طاہر القادری Tahir ul Qadri

بیشک جو میرے بندے ہیں ان پر تیرا تسلط نہیں ہو سکے گا، اور تیرا رب ان (اﷲ والوں) کی کارسازی کے لئے کافی ہے،