Skip to main content

وَاِنَّا لَجٰعِلُوْنَ مَا عَلَيْهَا صَعِيْدًا جُرُزًا ۗ

وَإِنَّا
اور بیشک ہم
لَجَٰعِلُونَ
البتہ بنانے والے ہیں/ کرنے والے ہیں
مَا
جو
عَلَيْهَا
اس پر ہے
صَعِيدًا
مٹی/ صاف میدان
جُرُزًا
بنجر/ بالکل ہموار

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

آخرکار اِس سب کو ہم ایک چٹیل میدان بنا دینے والے ہیں

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

آخرکار اِس سب کو ہم ایک چٹیل میدان بنا دینے والے ہیں

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

اور بیشک جو کچھ اس پر ہے ایک دن ہم اسے پٹ پر میدان (سفید زمین) کو چھوڑیں گے

احمد علی Ahmed Ali

اورجو کچھ اس پر ہے بے شک ہم سب کو چٹیل میدان کر دیں گے

أحسن البيان Ahsanul Bayan

اس پر جو کچھ ہے ہم اسے ایک ہموار صاف میدان کر ڈالنے والے ہیں (١)۔

٨۔١ صعیدا۔ صاف میدان۔ جرز۔ بالکل ہموار۔ جس میں کوئی درخت وغیرہ نہ ہو، یعنی ایک وقت آئے گا کہ یہ دنیا اپنی تمام تر رونقوں سمیت فنا ہو جائے گی اور روئے زمین ایک چٹیل اور ہموار میدان کی طرح ہو جائے گی، اس کے بعد ہم نیک و بد کو ان کے عملوں کے مطابق جزا دیں گے۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

اور جو چیز زمین پر ہے ہم اس کو (نابود کرکے) بنجر میدان کردیں گے

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

اس پر جو کچھ ہے ہم اسے ایک ہموار صاف میدان کر ڈالنے والے ہیں

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

اور جو کچھ زمین پر ہے ہم اسے (ایک دن) چٹیل میدان بنانے والے ہیں۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

اور ہم آخرکار روئے زمین کی ہر چیز کو چٹیل میدان بنادینے والے ہیں

طاہر القادری Tahir ul Qadri

اور بیشک ہم اِن (تمام) چیزوں کو جو اس (روئے زمین) پر ہیں (نابود کر کے) بنجر میدان بنا دینے والے ہیں،