Skip to main content

وَ كَانَ يَأْمُرُ اَهْلَهٗ بِالصَّلٰوةِ وَالزَّكٰوةِۖ وَكَانَ عِنْدَ رَبِّهٖ مَرْضِيًّا

وَكَانَ
اور وہ تھے
يَأْمُرُ
حکم دیتے
أَهْلَهُۥ
اپنے گھروالوں کو
بِٱلصَّلَوٰةِ
نماز کا
وَٱلزَّكَوٰةِ
اور زکوۃ کا
وَكَانَ
اور وہ تھے
عِندَ
کے ہاں
رَبِّهِۦ
اپنے رب (کے ہاں)
مَرْضِيًّا
پسندیدہ

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

وہ اپنے گھر والوں کو نماز اور زکوٰۃ کا حکم دیتا تھا اور اپنے رب کے نزدیک ایک پسندیدہ انسان تھا

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

وہ اپنے گھر والوں کو نماز اور زکوٰۃ کا حکم دیتا تھا اور اپنے رب کے نزدیک ایک پسندیدہ انسان تھا

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

اور اپنے گھر والوں کو نماز اور زکوٰة کا حکم دیتا اور اپنے رب کو پسند تھا

احمد علی Ahmed Ali

اور اپنے گھر والوں کو نماز اور زکوٰةکا حکم کرتا تھا اور وہ اپنے رب کے ہاں پسندیدہ تھا

أحسن البيان Ahsanul Bayan

وہ اپنے گھر والوں کو برابر نماز اور زکوۃ کا حکم دیتا تھا، اور تھا بھی اپنے پروردگار کی بارگاہ میں پسندیدہ اور مقبول۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

اور اپنے گھر والوں کو نماز اور زکوٰة کا حکم کرتے تھے اور اپنے پروردگار کے ہاں پسندیدہ (وبرگزیدہ) تھے

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

وه اپنے گھر والوں کو برابر نماز اور زکوٰة کاحکم دیتا تھا، اور تھا بھی اپنے پروردگار کی بارگاه میں پسندیده اور مقبول

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

اور اپنے گھر والوں کو نماز اور زکوٰۃ کا حکم دیتے تھے اور وہ اپنے پروردگار کے نزدیک پسندیدہ تھے۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

اور وہ اپنے گھر والوں کو نماز اور زکوِٰ کا حکم دیتے تھے اور اپنے پروردگار کے نزدیک پسندیدہ تھے

طاہر القادری Tahir ul Qadri

اور وہ اپنے گھر والوں کو نماز اور زکوٰۃ کا حکم دیتے تھے، اور وہ اپنے رب کے حضور مقام مرضیّہ پر (فائز) تھے (یعنی ان کا رب ان سے راضی تھا)،