Skip to main content

اِنَّ الَّذِيْنَ يَأْكُلُوْنَ اَمْوَالَ الْيَتٰمٰى ظُلْمًا اِنَّمَا يَأْكُلُوْنَ فِىْ بُطُوْنِهِمْ نَارًا ۗ وَسَيَـصْلَوْنَ سَعِيْرًا

إِنَّ
بیشک
ٱلَّذِينَ
وہ لوگ
يَأْكُلُونَ
جو کھاتے ہیں
أَمْوَٰلَ
مال
ٱلْيَتَٰمَىٰ
یتیموں کے
ظُلْمًا
ظلم کے ساتھ
إِنَّمَا
بیشک
يَأْكُلُونَ
وہ کھاتے ہیں
فِى
میں
بُطُونِهِمْ
اپنے پیٹوں میں
نَارًاۖ
آگ
وَسَيَصْلَوْنَ
اور عنقریب وہ داخل ہوں گے
سَعِيرًا
بھڑکتی ہوئی آگ میں

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

جو لوگ ظلم کے ساتھ یتیموں کے مال کھاتے ہیں در حقیقت وہ اپنے پیٹ آگ سے بھرتے ہیں اور وہ ضرور جہنم کی بھڑکتی ہوئی آگ میں جھونکے جائیں گے

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

جو لوگ ظلم کے ساتھ یتیموں کے مال کھاتے ہیں در حقیقت وہ اپنے پیٹ آگ سے بھرتے ہیں اور وہ ضرور جہنم کی بھڑکتی ہوئی آگ میں جھونکے جائیں گے

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

وہ جو یتیموں کا مال ناحق کھاتے ہیں وہ تو اپنے پیٹ میں نری آ گ بھرتے ہیں اور کوئی دم جاتا ہے کہ بھڑتے دھڑے (آتش کدے) میں جائیں گے،

احمد علی Ahmed Ali

بے شک جو لوگ یتیموں کا مال ناحق کھاتے ہیں وہ اپنے پیٹ آگ سے بھرتے ہیں اور عنقریب آگ میں داخل ہوں گے

أحسن البيان Ahsanul Bayan

جو لوگ ناحق ظلم سے یتیموں کا مال کھاتے ہیں، وہ اپنے پیٹ میں آگ ہی بھر رہے ہیں اور عنقریب وہ دوزخ میں جائیں گے۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

لوگ یتیموں کا مال ناجائز طور پر کھاتے ہیں وہ اپنے پیٹ میں آگ بھرتے ہیں۔ اور دوزخ میں ڈالے جائیں گے

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

جو لوگ ناحق ﻇلم سے یتیموں کا مال کھا جاتے ہیں، وه اپنے پیٹ میں آگ ہی بھر رہے ہیں اور عنقریب وه دوزخ میں جائیں گے

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

بے شک جو لوگ ظلم کے ساتھ یتیموں کا مال کھاتے ہیں وہ اپنے پیٹوں میں آگ بھر رہے ہیں اور عنقریب بھڑکتی ہوئی آگ میں داخل ہوں گے (واصل جہنم ہوں گے۔)

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

جو لوگ ظالمانہ انداز سے یتیموں کا مال کھاجاتے ہیں وہ درحقیقت اپنے پیٹ میں آگ بھررہے ہیں اور عنقریب واصل جہّنم ہوں گے

طاہر القادری Tahir ul Qadri

بیشک جو لوگ یتیموں کے مال ناحق طریقے سے کھاتے ہیں وہ اپنے پیٹوں میں نری آگ بھرتے ہیں، اور وہ جلد ہی دہکتی ہوئی آگ میں جا گریں گے،