Skip to main content

فَوَرَبِّ السَّمَاۤءِ وَالْاَرْضِ اِنَّهٗ لَحَـقٌّ مِّثْلَ مَاۤ اَنَّكُمْ تَنْطِقُوْنَ

فَوَرَبِّ
پس قسم ہے رب کی
ٱلسَّمَآءِ
آسمانوں کے
وَٱلْأَرْضِ
اور زمین کے
إِنَّهُۥ
بیشک وہ
لَحَقٌّ
البتہ حق ہے
مِّثْلَ
مانند اس کے
مَآ
جو
أَنَّكُمْ
بیشک تم
تَنطِقُونَ
تم بولتے ہو

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

پس قسم ہے آسمان اور زمین کے مالک کی، یہ بات حق ہے، ایسی ہی یقینی جیسے تم بول رہے ہو

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

پس قسم ہے آسمان اور زمین کے مالک کی، یہ بات حق ہے، ایسی ہی یقینی جیسے تم بول رہے ہو

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

تو آسمان اور زمین کے رب کی قسم بیشک یہ قرآن حق ہے ویسی ہی زبان میں جو تم بولتے ہو،

احمد علی Ahmed Ali

پس آسمان اور زمین کے مالک کی قسم ہے بے شک یہ (قرآن) برحق ہے جیسا تم باتیں کرتے ہو

أحسن البيان Ahsanul Bayan

آسمانوں اور زمین کے پروردگار کی قسم! کہ یہ (١) بالکل برحق ہے ایسا ہی جیسے کہ تم باتیں کرتے ہو۔

٢٣۔١ اِنہ میں ضمیر کا مرجع (یہ) وہ امور و آیات ہیں جو مذکور ہوئیں۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

تو آسمانوں اور زمین کے مالک کی قسم! یہ (اسی طرح) قابل یقین ہے جس طرح تم بات کرتے ہو

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

آسمان وزمین کے پروردگار کی قسم! کہ یہ بالکل برحق ہے ایسا ہی جیسے کہ تم باتیں کرتے ہو

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

پس قَسم ہے آسمان و زمین کے پروردگار کی کہ یہ بات حق ہے جیسے کہ تم بو لتے ہو۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

آسمان و زمین کے مالک کی قسم یہ قرآن بالکل برحق ہے جس طرح تم خو دباتیں کررہے ہو

طاہر القادری Tahir ul Qadri

پس آسمان اور زمین کے مالک کی قَسم! یہ (ہمارا وعدہ) اسی طرح یقینی ہے جس طرح تمہارا اپنا بولنا (تمہیں اس پر کامل یقین ہوتا ہے کہ منہ سے کیا کہہ رہے ہو)،