Skip to main content

قَالُـوْۤا اِنَّا كُـنَّا قَبْلُ فِىْۤ اَهْلِنَا مُشْفِقِيْنَ

قَالُوٓا۟
کہیں گے
إِنَّا
بیشک ہم
كُنَّا
تھے ہم
قَبْلُ
اس سے پہلے
فِىٓ
میں
أَهْلِنَا
اپنے گھر والوں
مُشْفِقِينَ
ڈرنے والے

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

یہ کہیں گے کہ ہم پہلے اپنے گھر والوں میں ڈرتے ہوئے زندگی بسر کرتے تھے

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

یہ کہیں گے کہ ہم پہلے اپنے گھر والوں میں ڈرتے ہوئے زندگی بسر کرتے تھے

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

بولے بیشک ہم اس سے پہلے اپنے گھروں میں سہمے ہوئے تھے

احمد علی Ahmed Ali

کہیں گے ہم تو اس سے پہلے اپنے گھروں میں ڈرا کرتے تھے

أحسن البيان Ahsanul Bayan

کہیں گے کہ اس سے پہلے ہم اپنے گھر والوں کے درمیان بہت ڈرا کرتے تھے (١)

٢٦۔١ یعنی اللہ کے عذاب سے۔ اس لئے اس عذاب سے بچنے کا اہتمام بھی کرتے رہے، اس لئے کہ انسان کو جس چیز کا ڈر ہوتا ہے، اس سے بچنے کے لئے وہ تگ و دو کرتا ہے۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

کہیں گے کہ اس سے پہلے ہم اپنے گھر میں (خدا سے) ڈرتے رہتے تھے

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

کہیں گے کہ اس سے پہلے ہم اپنے گھر والوں کے درمیان بہت ڈرا کرتے تھے

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

وہ کہیں گے کہ ہم اس سے پہلے اپنے گھر بار میں (اپنے انجام سے) ڈرتے رہتے تھے۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

کہیں گے کہ ہم تو اپنے گھر میں خدا سے بہت ڈرتے تھے

طاہر القادری Tahir ul Qadri

وہ کہیں گے: بیشک ہم اس سے پہلے اپنے گھروں میں (عذابِ الٰہی سے) ڈرتے رہتے تھے،