Skip to main content

لَّا يَمَسُّهٗۤ اِلَّا الْمُطَهَّرُوْنَۗ

لَّا
نہیں
يَمَسُّهُۥٓ
چھوتے اس کو
إِلَّا
مگر
ٱلْمُطَهَّرُونَ
مطہرین۔ پاکیزہ لوگ

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

جسے مطہرین کے سوا کوئی چھو نہیں سکتا

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

جسے مطہرین کے سوا کوئی چھو نہیں سکتا

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

اسے نہ چھوئیں مگر باوضو

احمد علی Ahmed Ali

جسے بغیر پاکو ں کے اور کوئی نہیں چھوتا

أحسن البيان Ahsanul Bayan

جسے صرف پاک لوگ ہی چھو سکتے ہیں (١)

٧٩۔١ یعنی اس قرآن کو فرشتے ہی چھوتے ہیں، یعنی آسمانوں پر فرشتوں کے علاوہ کسی کی بھی رسائی اس قرآن تک نہیں ہوتی۔ مطلب مشرکین کی تردید ہے جو کہتے تھے کہ قرآن شیاطین لے کر اترتے ہیں۔ اللہ نے فرمایا یہ کیوں کر ممکن ہے یہ قرآن تو شیطانی اثرات سے بالکل محفوظ ہے۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

اس کو وہی ہاتھ لگاتے ہیں جو پاک ہیں

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

جسے صرف پاک لوگ ہی چھو سکتے ہیں

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

اسے پاک لوگوں کے سوا کوئی نہیں چھو سکتا۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

اسے پاک و پاکیزہ افراد کے علاوہ کوئی چھو بھی نہیں سکتا ہے

طاہر القادری Tahir ul Qadri

اس کو پاک (طہارت والے) لوگوں کے سوا کوئی نہیں چُھوئے گا،