Skip to main content

قَالُوْا سُبْحٰنَ رَبِّنَاۤ اِنَّا كُنَّا ظٰلِمِيْنَ

قَالُوا۟
انہوں نے کہا
سُبْحَٰنَ
پاک ہے
رَبِّنَآ
رب ہمارا
إِنَّا
بیشک ہم
كُنَّا
تھے ہم
ظَٰلِمِينَ
ظالم

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

و ہ پکار اٹھے پاک ہے ہمارا رب، واقعی ہم گناہ گار تھے

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

و ہ پکار اٹھے پاک ہے ہمارا رب، واقعی ہم گناہ گار تھے

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

بولے پاکی ہے ہمارے رب کو بیشک ہم ظالم تھے،

احمد علی Ahmed Ali

انہوں نے کہا ہمارا رب پاک ہے بے شک ہم ظالم تھے

أحسن البيان Ahsanul Bayan

تو سب کہنے لگے ہمارا رب پاک ہے بیشک ہم ہی ظالم تھے۔ (۱)

۲۹۔۱یعنی اب انہیں احساس ہوا کہ ہم نے اپنے باپ کے طرز عمل کے خلاف قدم اٹھا کر غلطی کا ارتکاب کیا ہے جس کی سزا اللہ نے ہمیں دی ہے اس سے یہ بھی معلوم ہوا کہ معصیت کا عزم اور اس کے لیے ابتدائی اقدامات بھی ارتکاب معصیت کی طرح جرم ہے جس پر مؤاخذہ ہوسکتا ہے صرف وہ ارادہ معاف ہے جو وسوسے کی حد تک ہو۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

(تب) وہ کہنے لگے کہ ہمارا پروردگار پاک ہے بےشک ہم ہی قصوروار تھے

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

تو سب کہنے لگے ہمارا رب پاک ہے بیشک ہم ہی ﻇالم تھے

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

(تب) انہوں نے کہا کہ پاک ہے ہمارا پروردگار بےشک ہم ظالم تھے۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

کہنے لگے کہ ہمارا رب پاک و بے نیاز ہے اور ہم واقعا ظالم تھے

طاہر القادری Tahir ul Qadri

(تب) وہ کہنے لگے کہ ہمارا رب پاک ہے، بے شک ہم ہی ظالم تھے،