Skip to main content

اِنَّا نَخَافُ مِنْ رَّبِّنَا يَوْمًا عَبُوْسًا قَمْطَرِيْرًا

إِنَّا
بیشک ہم
نَخَافُ
ہم ڈرتے ہیں
مِن
سے
رَّبِّنَا
اپنے رب
يَوْمًا
اس دن سے
عَبُوسًا
منہ بنانے والا ہوگا
قَمْطَرِيرًا
تیوری چڑھانے والا ہوگا

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

ہمیں تو اپنے رب سے اُس دن کے عذاب کا خوف لاحق ہے جو سخت مصیبت کا انتہائی طویل دن ہوگا

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

ہمیں تو اپنے رب سے اُس دن کے عذاب کا خوف لاحق ہے جو سخت مصیبت کا انتہائی طویل دن ہوگا

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

بیشک ہمیں اپنے رب سے ایک ایسے دن کا ڈر ہے جو بہت ترش نہایت سخت ہے

احمد علی Ahmed Ali

ہم تو اپنے رب سے ایک اداس (اور) ہولناک دن سے ڈرتے ہیں

أحسن البيان Ahsanul Bayan

بیشک ہم اپنے پروردگار سے اس دن کا خوف کرتے ہیں (١) جو اداسی اور سختی والا ہوگا۔

١٠۔١ یعنی وہ دن نہایت سخت ہوگا اور سختیوں اور ہولناکیوں کی وجہ سے کافروں پر بڑا لمبا ہوگا (ابن کثیر)

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

ہم کو اپنے پروردگار سے اس دن کا ڈر لگتا ہے (جو چہروں کو) کریہہ المنظر اور (دلوں کو) سخت (مضطر کر دینے والا) ہے

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

بیشک ہم اپنے پروردگار سے اس دن کا خوف کرتے ہیں جو اداسی اور سختی واﻻ ہوگا

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

ہم تو اپنے پروردگار کی طرف سے ایک ایسے دن (کے عذاب) سے ڈرتے ہیں جو بڑا ترش اور سخت ہوگا۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

ہم اپنے پروردگار سے اس دن کے بارے میں ڈرتے ہیں جس دن چہرے بگڑ جائیں گے اور ان پر ہوائیاں اڑنے لگیں گی

طاہر القادری Tahir ul Qadri

ہمیں تو اپنے ربّ سے اُس دن کا خوف رہتا ہے جو (چہروں کو) نہایت سیاہ (اور) بدنما کر دینے والا ہے،