Skip to main content

سَرَابِيْلُهُمْ مِّنْ قَطِرَانٍ وَّتَغْشٰى وُجُوْهَهُمُ النَّارُۙ

سَرَابِيلُهُم
لباس ان کے
مِّن
ہوں گے
قَطِرَانٍ
تارکول کے
وَتَغْشَىٰ
اور ڈھانپے ہوئے ہوگی
وُجُوهَهُمُ
ان کے چہروں کو
ٱلنَّارُ
اگ

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

تارکول کے لباس پہنے ہوئے ہوں گے اور آگ کے شعلے اُن کے چہروں پر چھائے جا رہے ہوں گے

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

تارکول کے لباس پہنے ہوئے ہوں گے اور آگ کے شعلے اُن کے چہروں پر چھائے جا رہے ہوں گے

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

ان کے کرُتے رال ہوں گے اور ان کے چہرے آ گ ڈھانپ لے گی

احمد علی Ahmed Ali

کرتےان کے گندھک کے ہوں گے اوران کے چہرو ں پر آگ لپٹی ہو گی

أحسن البيان Ahsanul Bayan

ان کے لباس گندھک کے ہونگے (١) اور آگ ان کے چہروں پر چڑھی ہوئی ہوگی۔

٥٠۔١ جو آگ سے فوراً بھڑک اٹھتی ہے۔ علاوہ ازیں آگ نے ان کے چہروں کو بھی ڈھانپا ہوگا ۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

ان کے کرتے گندھک کے ہوں گے اور ان کے مونہوں کو آگ لپیٹ رہی ہوگی

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

ان کے لباس گندھک کے ہوں گے اور آگ ان کے چہروں پر بھی چڑھی ہوئی ہوگی

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

ان کے کرتے تارکول کے ہوں گے اور ان کے چہروں کو آگ ڈھانپ رہی ہوگی۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

ان کے لباس قطران کے ہوں گے اور ان کے چہروں کو آگ ہر طرف سے ڈھانکے ہوئے ہوگی

طاہر القادری Tahir ul Qadri

ان کے لباس گندھک (یا ایسے روغن) کے ہوں گے (جو آگ کو خوب بھڑکاتا ہے) اور ان کے چہروں کو آگ ڈھانپ رہی ہوگی،