Skip to main content

لَهُمْ فِيْهَا زَفِيْرٌ وَّهُمْ فِيْهَا لَا يَسْمَعُوْنَ

لَهُمْ
ان کے لیے
فِيهَا
اس میں
زَفِيرٌ
کر اہنے کی آواز ہوگی۔ چلانے کی آواز ہوگی
وَهُمْ
اور وہ
فِيهَا
اس میں
لَا
نہ
يَسْمَعُونَ
سنتے ہوں گے

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

وہاں وہ پھنکارے ماریں گے اور حال یہ ہو گا کہ اس میں کان پڑی آواز نہ سنائی دے گی

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

وہاں وہ پھنکارے ماریں گے اور حال یہ ہو گا کہ اس میں کان پڑی آواز نہ سنائی دے گی

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

وہ اس میں رینکیں گے اور وہ اس میں کچھ نہ سنیں گے

احمد علی Ahmed Ali

ان کے لیے دوزخ میں چیخیں ہو ں گی اوروہ اس میں کچھ نہیں سنیں گے

أحسن البيان Ahsanul Bayan

وہ وہاں چلا رہے ہونگے اور وہاں کچھ بھی نہ سن سکیں گے (١)۔

١٠٠۔١ یعنی سارے کے سارے شدت غم و الم سے چیخ اور چلا رہے ہونگے، جس کی وجہ سے وہ ایک دوسرے کی آواز بھی نہیں سن سکیں گے۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

وہاں ان کو چلاّنا ہوگا اور اس میں (کچھ) نہ سن سکیں گے

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

وه وہاں چلا رہے ہوں گے اور وہاں کچھ بھی نہ سن سکیں گے

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

ان کی اس میں چیخ و پکار ہوگی اور وہ اس میں کچھ نہیں سنیں گے۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

جہنمّ میں ان کے لئے چیخ پکار ہوگی اور وہ کسی کی بات سننے کے قابل نہ ہوں گے

طاہر القادری Tahir ul Qadri

وہاں ان کی (آہوں کا شور اور) چیخ و پکار ہوگی اور اس میں کچھ (اور) نہ سن سکیں گے،