Skip to main content
ARBNDEENIDTRUR
bismillah

اِقْتَرَبَ لِلنَّاسِ حِسَابُهُمْ وَهُمْ فِىْ غَفْلَةٍ مُّعْرِضُوْنَۚ

اِقْتَرَبَ
قریب آگیا
لِلنَّاسِ
لوگوں کے لیے
حِسَابُهُمْ
حساب ان کا
وَهُمْ
اور وہ
فِيْ غَفْلَةٍ
غفلت میں
مُّعْرِضُوْنَ
منہ موڑے ہوئے ہیں

قریب آ گیا ہے لوگوں کے حساب کا وقت، اور وہ ہیں کہ غفلت میں منہ موڑے ہوئے ہیں

تفسير

مَا يَأْتِيْهِمْ مِّنْ ذِكْرٍ مِّنْ رَّبِّہِمْ مُّحْدَثٍ اِلَّا اسْتَمَعُوْهُ وَهُمْ يَلْعَبُوْنَۙ

مَا يَاْتِيْهِمْ
نہیں آتا ان کے پاس
مِّنْ ذِكْرٍ
کوئی ذکر۔ نصیحت
مِّنْ رَّبِّهِمْ
ان کے رب کی طرف سے
مُّحْدَثٍ
نیا۔ نئی
اِلَّا اسْتَـمَعُوْهُ
مگر وہ سنتے ہیں اس کو
وَهُمْ يَلْعَبُوْنَ
اور وہ کھیل رہے ہوتے ہیں

ان کے پاس جو تازہ نصیحت بھی ان کے رب کی طرف سے آتی ہے اُس کو بہ تکلف سنتے ہیں اور کھیل میں پڑے رہتے ہیں

تفسير

لَاهِيَةً قُلُوْبُهُمْ ۗ وَاَسَرُّوا النَّجْوَىۖ الَّذِيْنَ ظَلَمُوْا ۖ هَلْ هٰذَاۤ اِلَّا بَشَرٌ مِّثْلُكُمْ ۚ اَفَتَأْتُوْنَ السِّحْرَ وَاَنْتُمْ تُبْصِرُوْنَ

وَاَسَرُّوا النَّجْوَي ڰ
وہ لوگ جنہوں نے ظلم کیا
الَّذِيْنَ ظَلَمُوْا ڰ
نہیں یہ
هَلْ ھٰذَآ
مگر
اِلَّا
ایک انسان ہے تمہاری طرح کا
بَشَرٌ مِّثْلُكُمْ ۚ
کیا بھلا تم آتے ہو
اَفَتَاْتُوْنَ
جادو کو
السِّحْرَ
اور تم
وَاَنْتُمْ
تم دیکھتے ہو
تُبْصِرُوْنَ
تم دیکھتے ہو

دِل ان کے (دوسری ہی فکروں میں) منہمک ہیں اور ظالم آپس میں سرگوشیاں کرتے ہیں کہ "یہ شخص آخر تم جیسا ایک بشر ہی تو ہے، پھر کیا تم آنکھوں دیکھتے جادُو کے پھندے میں پھنس جاؤ گے؟"

تفسير

قٰلَ رَبِّىْ يَعْلَمُ الْقَوْلَ فِى السَّمَاۤءِ وَالْاَرْضِۖ وَهُوَ السَّمِيْعُ الْعَلِيْمُ

قٰلَ
کہا
رَبِّيْ
میرا رب
يَعْلَمُ الْقَوْلَ
جانتا ہے بات کو
فِي السَّمَاۗءِ وَالْاَرْضِ ۡ
آسمان میں اور زمین میں
وَهُوَ السَّمِيْعُ الْعَلِيْمُ
اور وہ سننے والا، جاننے والا ہے

رسُولؐ نے کہا میرا رب ہر اُس بات کو جانتا ہے جو آسمان اور زمین میں کی جائے، وہ سمیع اور علیم ہے

تفسير

بَلْ قَالُوْۤا اَضْغَاثُ اَحْلَامٍۢ بَلِ افْتَـرٰٮهُ بَلْ هُوَ شَاعِرٌ ۚ فَلْيَأْتِنَا بِاٰيَةٍ كَمَاۤ اُرْسِلَ الْاَوَّلُوْنَ

بَلْ
بلکہ
قَالُـوْٓا
انہوں نے کہا
اَضْغَاثُ اَحْلَامٍۢ
پریشان خواب ہیں۔ خیال ہیں
بَلِ افْتَرٰىهُ
بلکہ اس نے گھڑ لیا ہے اس کو
بَلْ هُوَ شَاعِرٌ ښ
بلکہ وہ شاعر ہے
فَلْيَاْتِنَا
پس چاہیے کہ لائے ہمارے پاس
بِاٰيَةٍ
کوئی نشانی
كَمَآ اُرْسِلَ
جیسا کہ بھیجے گئے
الْاَوَّلُوْنَ
پہلے لوگ

وہ کہتے ہیں "بلکہ یہ پراگندہ خواب ہیں، بلکہ یہ اِس کی مَن گھڑت ہے، بلکہ یہ شخص شاعر ہے ورنہ یہ لائے کوئی نشانی جس طرح پرانے زمانے کے رسول نشانیوں کے ساتھ بھیجے گئے تھے"

تفسير

مَاۤ اٰمَنَتْ قَبْلَهُمْ مِّنْ قَرْيَةٍ اَهْلَـكْنٰهَاۚ اَفَهُمْ يُؤْمِنُوْنَ

مَآ اٰمَنَتْ
نہیں ایمان لائی
قَبْلَهُمْ
ان سے پہلے
مِّنْ قَرْيَةٍ
کوئی بستی
اَهْلَكْنٰهَا ۚ
ہلاک کردیا ہم نے اس کو
اَفَهُمْ
کیا بھلا وہ
يُؤْمِنُوْنَ
ایمان لائیں گے ؟

حالاں کہ اِن سے پہلے کوئی بستی بھی، جسے ہم نے ہلاک کیا، ایمان نہ لائی، اب کیا یہ ایمان لائیں گے؟

تفسير

وَمَاۤ اَرْسَلْنَا قَبْلَكَ اِلَّا رِجَالًا نُّوْحِىْۤ اِلَيْهِمْ فَسْـــَٔلُوْۤا اَهْلَ الذِّكْرِ اِنْ كُنْتُمْ لَا تَعْلَمُوْنَ

وَمَآ اَرْسَلْنَا
اور نہیں بھیجا ہم نے
قَبْلَكَ
آپ سے پہلے
اِلَّا رِجَالًا
مگر مردوں کو
نُّوْحِيْٓ
ہم وحی کیا کرتے تھے
اِلَيْهِمْ
ان کی طرف
فَسْــَٔـلُوْٓا
پس پوچھ لو
اَهْلَ الذِّكْرِ
کتاب والوں سے۔ ذکر والوں سے
اِنْ كُنْتُمْ
اگر ہو تم
لَا تَعْلَمُوْنَ
نہیں تم جانتے

اور اے محمدؐ، تم سے پہلے بھی ہم نے انسانوں ہی کو رسول بنا کر بھیجا تھا جن پر ہم وحی کیا کرتے تھے تم لوگ اگر علم نہیں رکھتے تو اہلِ کتاب سے پوچھ لو

تفسير

وَمَا جَعَلْنٰهُمْ جَسَدًا لَّا يَأْكُلُوْنَ الطَّعَامَ وَمَا كَانُوْا خٰلِدِيْنَ

وَمَا
اور نہیں
جَعَلْنٰهُمْ
بنائے ہم نے ان کے
جَسَدًا
ایسے جسم
لَّا يَاْكُلُوْنَ الطَّعَامَ
کہ نہ کھاتے ہوں کھانا
وَمَا
اور نہ
كَانُوْا
تھے وہ
خٰلِدِيْنَ
ہمیشہ رہنے والے

اُن رسُولوں کو ہم نے کوئی ایسا جسم نہیں دیا تھا کہ وہ کھاتے نہ ہوں، اور نہ وہ سدا جینے والے تھے

تفسير

ثُمَّ صَدَقْنٰهُمُ الْوَعْدَ فَاَنْجَيْنٰهُمْ وَمَنْ نَّشَاۤءُ وَاَهْلَكْنَا الْمُسْرِفِيْنَ

ثُمَّ
پھر
صَدَقْنٰهُمُ الْوَعْدَ
سچ کردیا ہم نے ان سے وعدہ
فَاَنْجَيْنٰهُمْ
پس نجات دی ہم نے ان کو
وَمَنْ نَّشَاۗءُ
اور جسے ہم نے چاہا
وَاَهْلَكْنَا
اور ہلاک کردیا ہم نے
الْمُسْرِفِيْنَ
حد سے بڑھنے والوں کو

پھر دیکھ لو کہ آخرکار ہم نے ان کے ساتھ اپنے وعدے پُورے کیے، اور انہیں اور جس جس کو ہم نے چاہا بچا لیا، اور حد سے گزر جانے والوں کو ہلاک کر دیا

تفسير

لَقَدْ اَنْزَلْنَاۤ اِلَيْكُمْ كِتٰبًا فِيْهِ ذِكْرُكُمْۗ اَفَلَا تَعْقِلُوْنَ

لَقَدْ
البتہ تحقیق
اَنْزَلْنَآ
نازل کی ہم نے۔ اتاری ہم نے
اِلَيْكُمْ
تمہاری طرف
كِتٰبًا
ایک کتاب
فِيْهِ ذِكْرُكُمْ ۭ
اس میں ذکر ہے تمہارا
اَفَلَا تَعْقِلُوْنَ
کیا پھر نہیں تم عقل سے کام لو گے

لوگو، ہم نے تمہاری طرف ایک ایسی کتاب بھیجی ہے جس میں تمہارا ہی ذکر ہے، کیا تم سمجھتے نہیں ہو؟

تفسير
کے بارے میں معلومات :
الانبیاء
القرآن الكريم:الأنبياء
آية سجدہ (سجدة):-
سورۃ کا نام (latin):Al-Anbiya
سورہ نمبر:21
کل آیات:112
کل کلمات:1168
کل حروف:4890
کل رکوعات:7
مقام نزول:مکہ مکرمہ
ترتیب نزولی:73
آیت سے شروع:2483