Skip to main content

لَا يَسْمَعُوْنَ حَسِيْسَهَا ۚ وَهُمْ فِىْ مَا اشْتَهَتْ اَنْفُسُهُمْ خٰلِدُوْنَ ۚ

لَا
نہ
يَسْمَعُونَ
وہ سنیں گے
حَسِيسَهَاۖ
اس کی آواز کو
وَهُمْ
اور وہ
فِى
اس (عیش) میں بھی ہوں گے
مَا
جو
ٱشْتَهَتْ
خواہش کریں گے
أَنفُسُهُمْ
ان کے نفس
خَٰلِدُونَ
ہمیشہ رہنے والے

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

اس کی سرسراہٹ تک نہ سُنیں گے اور وہ ہمیشہ ہمیشہ اپنی من بھاتی چیزوں کے درمیان رہیں گے

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

اس کی سرسراہٹ تک نہ سُنیں گے اور وہ ہمیشہ ہمیشہ اپنی من بھاتی چیزوں کے درمیان رہیں گے

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

وہ اس کی بھنک (ہلکی سی آواز بھی) نہ سنیں گے اور وہ اپنی من مانتی خواہشوں میں ہمیشہ رہیں گے،

احمد علی Ahmed Ali

اس کی آہٹ بھی نہ سنیں گے اور وہ اپنی من مانی مرادوں میں ہمیشہ رہیں گے

أحسن البيان Ahsanul Bayan

وہ تو دوزخ کی آہٹ تک نہ سنیں گے اور اپنی من بھاتی چیزوں میں ہمیشہ رہنے والے ہونگے۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

(یہاں تک کہ) اس کی آواز بھی تو نہیں سنیں گے۔ اور جو کچھ ان کا جی چاہے گا اس میں (یعنی) ہر طرح کے عیش اور لطف میں ہمیشہ رہیں گے

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

وه تو دوزخ کی آہٹ تک نہ سنیں گے اور اپنی من بھاتی چیزوں میں ہمیشہ رہنے والے ہوں گے

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

وہ اس کی آہٹ بھی نہیں سنیں گے اور وہ اپنی من پسند نعمتوں میں ہمیشہ رہیں گے۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

اور اس کی بھنک بھی نہ سنیں گے اور اپنی حسب خواہش نعمتوں میں ہمیشہ ہمیشہ آرام سے رہیں گے

طاہر القادری Tahir ul Qadri

وہ اس کی آہٹ بھی نہ سنیں گے اور وہ ان (نعمتوں) میں ہمیشہ رہیں گے جن کی ان کے دل خواہش کریں گے،