Skip to main content

لَّذِىْۤ اَحَلَّنَا دَارَ الْمُقَامَةِ مِنْ فَضْلِهٖۚ لَا يَمَسُّنَا فِيْهَا نَصَبٌ وَّلَا يَمَسُّنَا فِيْهَا لُـغُوْبٌ

ٱلَّذِىٓ
جس نے
أَحَلَّنَا
ٹھہرایا ہم کو
دَارَ
گھر (میں)
ٱلْمُقَامَةِ
قیام کے
مِن
سے
فَضْلِهِۦ
اپنے فضل (سے)
لَا
نہیں
يَمَسُّنَا
چھوئے گی ہم کو
فِيهَا
اس میں
نَصَبٌ
کوئی مشقت
وَلَا
اور نہیں
يَمَسُّنَا
چھوئے گی ہم کو
فِيهَا
اس میں
لُغُوبٌ
کوئی تکان۔ سستی

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

جس نے ہمیں اپنے فضل سے ابدی قیام کی جگہ ٹھیرا دیا، اب یہاں نہ ہمیں کوئی مشقت پیش آتی ہے اور نہ تکان لاحق ہوتی ہے

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

جس نے ہمیں اپنے فضل سے ابدی قیام کی جگہ ٹھیرا دیا، اب یہاں نہ ہمیں کوئی مشقت پیش آتی ہے اور نہ تکان لاحق ہوتی ہے

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

وہ جس نے ہمیں آرام کی جگہ اتارا اپنے فضل سے، ہمیں اس میں نہ کوئی تکلیف پہنچے نہ ہمیں اس میں کوئی تکان لاحق ہو،

احمد علی Ahmed Ali

وہ جس نے اپنے فضل سے ہمیں سدا رہنے کی جگہ میں اتارا جہاں ہمیں نہ کوئی رنج پہنچتا ہے اور نہ کوئی تکلیف

أحسن البيان Ahsanul Bayan

جس نے ہم کو اپنے فضل سے ہمیشہ رہنے کے مقام میں لا اتارا جہاں نہ ہم کو کوئی تکلیف پہنچے گی اور نہ ہم کو کوئی خستگی پہنچے گی۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

جس نے ہم کو اپنے فضل سے ہمیشہ کے رہنے کے گھر میں اُتارا۔ یہاں نہ تو ہم کو رنج پہنچے گا اور نہ ہمیں تکان ہی ہوگی

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

جس نے ہم کو اپنے فضل سے ہمیشہ رہنے کے مقام میں ﻻ اتارا جہاں نہ ہم کو کوئی تکلیف پہنچے گی اور نہ ہم کو کوئی خستگی پہنچے گی

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

جس نے ہمیں اپنے فضل و کرم سے ایسی دائمی قیامت کی جگہ پر اتارا ہے جہاں نہ کوئی زحمت ہوتی ہے اور نہ ہی تھکن محسوس ہوتی ہے۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

اس نے ہمیں اپنے فضل و کرم سے ایسی رہنے کی جگہ پر وارد کیا ہے جہاں نہ کوئی تھکن ہمیں چھو سکتی ہے اور نہ کوئی تکلیف ہم تک پہنچ سکتی ہے

طاہر القادری Tahir ul Qadri

جس نے ہمیں اپنے فضل سے دائمی اقامت کے گھر لا اتارا ہے، جس میں ہمیں نہ کوئی مشقّت پہنچے گی اور نہ اس میں ہمیں کوئی تھکن پہنچے گی،