Skip to main content

فَاِنَّمَا هِىَ زَجْرَةٌ وَّاحِدَةٌ فَاِذَا هُمْ يَنْظُرُوْنَ

فَإِنَّمَا
تو بیشک
هِىَ
وہ
زَجْرَةٌ
ڈانٹ ہوگی
وَٰحِدَةٌ
ایک ہی
فَإِذَا
تو دفعتًہ
هُمْ
وہ
يَنظُرُونَ
دیکھ رہے ہوں گے

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

بس ایک ہی جھڑکی ہو گی اور یکایک یہ اپنی آنکھوں سے (وہ سب کچھ جس کی خبر دی جا رہی ہے) دیکھ رہے ہوں گے

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

بس ایک ہی جھڑکی ہو گی اور یکایک یہ اپنی آنکھوں سے (وہ سب کچھ جس کی خبر دی جا رہی ہے) دیکھ رہے ہوں گے

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

تو وہ تو ایک ہی جھڑک ہے جبھی وہ دیکھنے لگیں گے،

احمد علی Ahmed Ali

پس وہ تو ایک زور کی آواز ہو گی پس ناگہان وہ دیکھنے لگیں گے

أحسن البيان Ahsanul Bayan

وہ تو صرف ایک روز کی جھڑکی ہے (١) کہ یکایک یہ دیکھنے لگیں گے (٢)۔

١٩۔١ یعنی وہ اللہ کے ایک ہی حکم اور اسرافیل علیہ السلام کی ایک ہی پھونک (نفخہ ثانیہ) سے قبروں سے زندہ ہو کر نکل کھڑے ہونگے۔
١٩۔٢ یعنی ان کے سامنے قیامت کے ہولناک مناظر اور میدان محشر کی سختیاں ہوں گی جنہیں وہ دیکھیں گے، نفخے یا چیخ کو زجرہ (ڈانٹ) سے تعبیر کیا، کیونکہ اس سے مقصود ڈانٹ ہی ہے

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

وہ تو ایک زور کی آواز ہوگی اور یہ اس وقت دیکھنے لگیں گے

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

وه تو صرف ایک زور کی جھڑکی ہے کہ یکایک یہ دیکھنے لگیں گے

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

بس وہ قیامت تو صرف ایک جھڑک ہوگی (اس کے بعد) ایک دم (زندہ ہو کر ادھر اُدھر) دیکھ رہے ہوں گے۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

یہ قیامت تو صرف ایک للکار ہوگی جس کے بعد سب دیکھنے لگیں گے

طاہر القادری Tahir ul Qadri

پس وہ تو محض ایک (زور دار آواز کی) سخت جھڑک ہوگی سو سب اچانک (اٹھ کر) دیکھنے لگ جائیں گے،