Skip to main content

اَلْاَخِلَّاۤءُ يَوْمَٮِٕذٍۢ بَعْضُهُمْ لِبَعْضٍ عَدُوٌّ اِلَّا الْمُتَّقِيْنَ ۗ 

ٱلْأَخِلَّآءُ
دوست
يَوْمَئِذٍۭ
آج کے دن
بَعْضُهُمْ
ان میں سے بعض
لِبَعْضٍ
بعض کے لیے
عَدُوٌّ
دشمن ہوں گے
إِلَّا
مگر
ٱلْمُتَّقِينَ
تقوی والے

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

وہ دن جب آئے گا تو متقین کو چھوڑ کر باقی سب دوست ایک دوسرے کے دشمن ہو جائیں گے

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

وہ دن جب آئے گا تو متقین کو چھوڑ کر باقی سب دوست ایک دوسرے کے دشمن ہو جائیں گے

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

گہرے دوست اس دن ایک دوسرے کے دشمن ہوں گے مگر پرہیزگار

احمد علی Ahmed Ali

اس دن دوست بھی آپس میں دشمن ہو جائیں گے مگر پرہیز گار لوگ

أحسن البيان Ahsanul Bayan

اس دن دوست بھی ایک دوسرے کے دشمن بن جائیں گے سوائے پرہزگاروں کے۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

(جو آپس میں) دوست (ہیں) اس روز ایک دوسرے کے دشمن ہوں گے۔ مگر پرہیزگار (کہ باہم دوست ہی رہیں گے)

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

اس دن (گہرے) دوست بھی ایک دوسرے کے دشمن بن جائیں گے سوائے پرہیزگاروں کے

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

اس دن سب دوست ایک دوسرے کے دشمن ہوں گے سوائے پرہیزگاروں کے۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

آج کے دن صاحبانِ تقویٰ کے علاوہ تمام دوست ایک دوسرے کے دشمن ہوجائیں گے

طاہر القادری Tahir ul Qadri

سارے دوست و احباب اُس دن ایک دوسرے کے دشمن ہوں گے سوائے پرہیزگاروں کے (انہی کی دوستی اور ولایت کام آئے گی)،