Skip to main content

وَّ اَنَّهٗ كَانَ يَقُوْلُ سَفِيْهُنَا عَلَى اللّٰهِ شَطَطًا ۙ

وَأَنَّهُۥ
اور بیشک وہ
كَانَ
تھے
يَقُولُ
کہا کرتے
سَفِيهُنَا
ہمارے نادان
عَلَى
پر
ٱللَّهِ
اللہ
شَطَطًا
زیادتی کی باتیں

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

اور یہ کہ "ہمارے نادان لوگ اللہ کے بارے میں بہت خلاف حق باتیں کہتے رہے ہیں"

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

اور یہ کہ "ہمارے نادان لوگ اللہ کے بارے میں بہت خلاف حق باتیں کہتے رہے ہیں"

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

اور یہ کہ ہم میں کا بے وقوف اللہ پر بڑھ کر بات کہتا تھا

احمد علی Ahmed Ali

اور ہم میں سے بعض بے وقوف ہیں جو الله پر جھوٹی باتیں بنایا کرتے تھے

أحسن البيان Ahsanul Bayan

اور یہ کہ ہم میں ایک بیوقوف اللہ کے بارے میں خلاف حق باتیں کہا کرتا تھا (١)

٤۔١ (ہمارے بےوقوف) سے بعض نے شیطان مراد لیا ہے اور بعض نے ان کے ساتھی جن اور بعض نے بطور جنس؛ یعنی ہر وہ شخص جو یہ گمان باطل رکھتا ہے کہ اللہ کی اولاد ہے۔ شَطَطًا کے کئ معنی کئے گئے ہیں، ظلم، جھوٹ، باطل، کفر میں مبالغہ وغیرہ۔ مقصد، راہ اعتدال سے دوری اور حد سے تجاوز ہے۔ مطلب یہ ہے کہ یہ بات کہ اللہ کی اولاد ہے ان بےوقوفوں کی بات ہے جو راہ اعتدال سے دور، حد متجاوز اور کاذب و افترا پرداز ہیں۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

اور یہ کہ ہم میں سے بعض بےوقوف خدا کے بارے میں جھوٹ افتراء کرتا ہے

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

اور یہ کہ ہم میں کا بیوقوف اللہ کے بارے میں خلاف حق باتیں کہا کرتا تھا

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

اور یہ کہ ہمارے بےوقوف لوگ خدا کے بارے میں خلافِ حق (ناروا) باتیں کرتے رہتے ہیں۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

اور ہمارے بیوقوف لوگ طرح طرح کی بے ربط باتیں کررہے ہیں

طاہر القادری Tahir ul Qadri

اور یہ کہ ہم میں سے کوئی اَحمق ہی اللہ کے بارے میں حق سے دور حد سے گزری ہوئی باتیں کہا کرتا تھا،