Skip to main content

فَلَمَّا رَاَوْهَا قَالُوْۤا اِنَّا لَـضَاۤلُّوْنَۙ

فَلَمَّا
تو جب
رَأَوْهَا
انہوں نے دیکھا اس کو
قَالُوٓا۟
کہنے لگے
إِنَّا
بیشک ہم
لَضَآلُّونَ
البتہ بھٹک گئے ہیں

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

مگر جب باغ کو دیکھا تو کہنے لگے "ہم راستہ بھول گئے ہیں

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

مگر جب باغ کو دیکھا تو کہنے لگے "ہم راستہ بھول گئے ہیں

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

پھر جب اسے بولے بیشک ہم راستہ بہک گئے

احمد علی Ahmed Ali

پس جب انہوں نے اسے دیکھا تو کہنے لگےکہ ہم تو راہ بھول گئے ہیں

أحسن البيان Ahsanul Bayan

جب انہوں نے باغ دیکھا (١) تو کہنے لگے یقیناً ہم راستہ بھول گئے ہیں۔ (۱)

٢٦۔١ یعنی باغ والی جگہ کو راکھ کا ڈھیر یا اسے تباہ برباد دیکھا۔ (۱) یعنی پہلے پہل تو ایک دوسرے کو کہا۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

جب باغ کو دیکھا تو (ویران) کہنے لگے کہ ہم رستہ بھول گئے ہیں

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

جب انہوں نے باغ دیکھا تو کہنے لگے یقیناً ہم راستہ بھول گئے

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

اور جب باغ کو (برباد) دیکھا تو کہا کہ ہم راستہ بھول گئے ہیں۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

اب جو باغ کو دیکھا تو کہنے لگے کہ ہم تو بہک گئے

طاہر القادری Tahir ul Qadri

پھر جب انہوں نے اس (ویران باغ) کو دیکھا تو کہنے لگے: ہم یقیناً راستہ بھول گئے ہیں (یہ ہمارا باغ نہیں ہے)،