Skip to main content

فَسَنُيَسِّرُهٗ لِلْعُسْرٰىۗ

فَسَنُيَسِّرُهُۥ
پس عنقریب ہم آسانی دیں گے اس کو
لِلْعُسْرَىٰ
تنگی کے لئے

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

اس کو ہم سخت راستے کے لیے سہولت دیں گے

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

اس کو ہم سخت راستے کے لیے سہولت دیں گے

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

تو بہت جلد ہم اسے دشواری مہیا کردیں گے

احمد علی Ahmed Ali

تو ہم اس کے لیے جہنم کی راہیں آسان کر دیں گے

أحسن البيان Ahsanul Bayan

تو ہم بھی اس کی تنگی و مشکل کے سامان میسر کر دیں گے۔ (۱)

۱۰۔۱تنگی سے مراد کفر ومعصیت اور طریق شر ہے، یعنی ہم اس کے لیے نافرمانی کا راستہ آسان کر دیں گے، جس سے اس کے لیے خیر وسعادت کے راستے مشکل ہو جائیں گے، قرآن مجید میں یہ مضمون کئی جگہ بیان کیا گیا ہے کہ جو خیر و رشد کا راستہ اپناتا ہے اس کے صلے میں اللہ اسے خیر و توفیق سے نوازتا ہے اور جو شر و معصیت کو اختیار کرتا ہے اللہ اس کو اس کے حال پر چھوڑتا ہے یہ اس کی تقدیر کے مطابق ہوتا ہے جو اللہ نے اپنے علم سے لکھ رکھی ہے۔ (ابن کثیر)

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

اسے سختی میں پہنچائیں گے

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

تو ہم بھی اس کی تنگی ومشکل کے سامان میسر کر دیں گے

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

تو ہم اسے سخت راستے کی سہولت دیں گے۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

اس کے لئے سختی کی راہ ہموار کردیں گے

طاہر القادری Tahir ul Qadri

تو ہم عنقریب اسے سختی (یعنی عذاب کی طرف بڑھنے) کے لئے سہولت فراہم کر دیں گے (تاکہ وہ تیزی سے مستحقِ عذاب ٹھہرے)،