Skip to main content

قَالَ وَمَنْ يَّقْنَطُ مِنْ رَّحْمَةِ رَبِّهٖۤ اِلَّا الضَّاۤلُّوْنَ

قَالَ
ابراہیم نے کہا
وَمَن
اور کون
يَقْنَطُ
مایوس ہوسکتا ہے
مِن
سے
رَّحْمَةِ
رحمت سے
رَبِّهِۦٓ
اپنے رب کی
إِلَّا
مگر
ٱلضَّآلُّونَ
وہ جو بھٹکے ہوئے ہوں۔ سوائے گمراہوں کے

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

ابراہیمؑ نے کہا "اپنے رب کی رحمت سے مایوس تو گمراہ لوگ ہی ہوا کرتے ہیں"

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

ابراہیمؑ نے کہا "اپنے رب کی رحمت سے مایوس تو گمراہ لوگ ہی ہوا کرتے ہیں"

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

کہا اپنے رب کی رحمت سے کون ناامید ہو مگر وہی جو گمراہ ہوئے، ف۶۱)

احمد علی Ahmed Ali

کہا اپنے رب کی رحمت سے نا امید تو گمراہ لوگ ہی ہوا کرتے ہیں

أحسن البيان Ahsanul Bayan

کہا اپنے رب تعالٰی کی رحمت سے نا امید تو صرف گمراہ اور بہکے ہوئے لوگ ہی ہوتے ہیں (١)۔

٥٦۔١ یعنی اولاد کے ہونے پر میں تعجب اور حیرت کا اظہار کر رہا ہوں تو صرف اپنے بڑھاپے کی وجہ سے کر رہا ہوں یہ بات نہیں ہے کہ میں اپنے رب کی رحمت سے نا امید ہوں۔ رب کی رحمت سے نا امید تو گمراہ لوگ ہی ہوتے ہیں۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

(ابراہیم نے) کہا کہ خدا کی رحمت سے (میں مایوس کیوں ہونے لگا اس سے) مایوس ہونا گمراہوں کا کام ہے

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

کہا اپنے رب تعالیٰ کی رحمت سے ناامید تو صرف گمراه اور بہکے ہوئے لوگ ہی ہوتے ہیں

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

ابراہیم(ع) نے کہا اپنے پروردگار کی رحمت سے تو گمراہوں کے سوا کون مایوس ہوتا ہے؟

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

ابراہیم علیھ السّلام نے کہا کہ رحمت خدا سے سوائے گمراہوں کے کون مایوس ہوسکتا ہے

طاہر القادری Tahir ul Qadri

ابراہیم (علیہ السلام) نے کہا: اپنے رب کی رحمت سے گمراہوں کے سوا اور کون مایوس ہو سکتا ہے،