Skip to main content

وَيَدْرَؤُا عَنْهَا الْعَذَابَ اَنْ تَشْهَدَ اَرْبَعَ شَهٰدٰتٍۢ بِاللّٰهِۙ اِنَّهٗ لَمِنَ الْكٰذِبِيْنَۙ

وَيَدْرَؤُا۟
اور دور کرتا ہے۔ ٹال سکتا ہے
عَنْهَا
اس سے (اس عورت سے)
ٱلْعَذَابَ
عذاب کو
أَن
اگر
تَشْهَدَ
وہ گواہی دے
أَرْبَعَ
چار
شَهَٰدَٰتٍۭ
گواہیاں
بِٱللَّهِۙ
اللہ کے ساتھ (اللہ کے نام کے ساتھ)
إِنَّهُۥ
بیشک وہ
لَمِنَ
البتہ سے
ٱلْكَٰذِبِينَ
جھوٹوں میں (سے) ہے

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

اور عورت سے سزا اس طرح ٹل سکتی ہے کہ وہ چار مرتبہ اللہ کی قسم کھا کر شہادت دے کہ یہ شخص (اپنے الزام میں) جھوٹا ہے

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

اور عورت سے سزا اس طرح ٹل سکتی ہے کہ وہ چار مرتبہ اللہ کی قسم کھا کر شہادت دے کہ یہ شخص (اپنے الزام میں) جھوٹا ہے

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

اور عورت سے یوں سزا ٹل جائے گی کہ وہ اللہ کا نام لے کر چار بار گواہی دے کہ مرد جھوٹا ہے

احمد علی Ahmed Ali

او رعورت کی سزا کو یہ بات دور کر دے گی کہ الله کو گواہ کر کے چار مرتبہ یہ کہے کہ بے شک اس پر الله کا غضب پڑے اگر وہ سچا ہے

أحسن البيان Ahsanul Bayan

اور اس عورت سے سزا اس طرح دور ہوسکتی ہے کہ وہ چار مرتبہ اللہ کی قسم کھا کر کہے کہ یقیناً اس کا مرد جھوٹ بولنے والوں میں سے ہے۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

اور عورت سے سزا کو یہ بات ٹال سکتی ہے کہ وہ پہلے چار بار خدا کی قسم کھائے کہ بےشک یہ جھوٹا ہے

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

اور اس عورت سے سزا اس طرح دور ہوسکتی ہے کہ وه چار مرتبہ اللہ کی قسم کھا کر کہے کہ یقیناً اس کا مرد جھوٹ بولنے والوں میں سے ہے

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

اور اس عورت سے یہ صورت شرعی حد کو ٹال سکتی ہے کہ وہ چار بار اللہ کی قسم کھا کر کہے کہ وہ (خاوند) جھوٹا ہے۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

پھر عورت سے بھی حد برطرف ہوسکتی ہے اگر وہ چار مرتبہ قسم کھاکر یہ کہے کہ یہ مرد جھوٹوں میں سے ہے

طاہر القادری Tahir ul Qadri

اور (اسی طرح) یہ بات اس (عورت) سے (بھی) سزا کو ٹال سکتی ہے کہ وہ چار مرتبہ اللہ کی قسم کھا کر (خود) گواہی دے کہ وہ (مرد اس تہمت کے لگانے میں) جھوٹا ہے،