Skip to main content

فَنَبَذْنٰهُ بِالْعَرَاۤءِ وَهُوَ سَقِيْمٌۚ

فَنَبَذْنَٰهُ
تو ہم نے پھینک دیا اس کو
بِٱلْعَرَآءِ
چٹیل زمین پر
وَهُوَ
اور وہ
سَقِيمٌ
بیمار تھے/کمزور تھے/ناتواں تھے/علیل تھے/مضمحل تھے

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

آخرکار ہم نے اسے بڑی سقیم حالت میں ایک چٹیل زمین پر پھینک دیا

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

آخرکار ہم نے اسے بڑی سقیم حالت میں ایک چٹیل زمین پر پھینک دیا

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

پھر ہم نے اسے میدان میں ڈال دیا اور وہ بیمار تھا

احمد علی Ahmed Ali

پھر ہم نے اسے میدان میں ڈال دیا اور وہ بیمار تھا

أحسن البيان Ahsanul Bayan

پس انہیں ہم نے چٹیل میدان میں ڈال دیا اور وہ اس وقت بیمار تھے (١)

١٤٥۔١ جیسے ولادت کے وقت بچہ یا جانور کا چوزہ ہوتا ہے، کمزور اور ناتواں۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

پھر ہم نے ان کو جب کہ وہ بیمار تھے فراخ میدان میں ڈال دیا

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

پس انہیں ہم نے چٹیل میدان میں ڈال دیا اور وه اس وقت بیمار تھے

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

سو ہم نے انہیں (مچھلی کے پیٹ سے نکال کر) ایک کھلے میدان میں ڈال دیا۔ اس حال میں کہ وہ بیمار تھے۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

پھر ہم نے ان کو ایک میدان میں ڈال دیا جب کہ وہ مریض بھی ہوگئے تھے

طاہر القادری Tahir ul Qadri

پھر ہم نے انہیں (ساحلِ دریا پر) کھلے میدان میں ڈال دیا حالانکہ وہ بیمار تھے،