Skip to main content

فَاِنَّهُمْ لَاٰكِلُوْنَ مِنْهَا فَمٰلِــُٔــوْنَ مِنْهَا الْبُطُوْنَ ۗ

فَإِنَّهُمْ
پس بیشک وہ
لَءَاكِلُونَ
البتہ کھانے والے ہیں
مِنْهَا
اس سے
فَمَالِـُٔونَ
پھر بھرنے والے ہیں
مِنْهَا
اس سے
ٱلْبُطُونَ
پیٹوں کو

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

جہنم کے لوگ اُسے کھائیں گے اور اسی سے پیٹ بھریں گے

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

جہنم کے لوگ اُسے کھائیں گے اور اسی سے پیٹ بھریں گے

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

پھر بیشک وہ اس میں سے کھائیں گے پھر اس سے پیٹ بھریں گے،

احمد علی Ahmed Ali

پس بے شک وہ اس میں سے کھائیں گے پھر اس سے اپنے پیٹ بھر لیں گے

أحسن البيان Ahsanul Bayan

(جہنمی) اسی درخت میں سے کھائیں گے اور اسی سے پیٹ بھریں گے (١)۔

٦٦۔١ یہ انہیں نہایت کراہت سے کھانا پڑے گا جس سے ظاہر بات ہے پیٹ بوجھل ہی ہونگے۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

سو وہ اسی میں سے کھائیں گے اور اسی سے پیٹ بھریں گے

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

(جہنمی) اسی درخت سے کھائیں گے اور اسی سے پیٹ بھریں گے

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

جہنمی لوگ اسے کھائیں گے اور اسی سے پیٹ بھریں گے۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

مگر یہ جہنّمی اسی کو کھائیں گے اور اسی سے پیٹ بھریں گے

طاہر القادری Tahir ul Qadri

پس وہ (دوزخی) اسی میں سے کھانے والے ہیں اور اسی سے پیٹ بھرنے والے ہیں،