Skip to main content

اِنَّا كَاشِفُوا الْعَذَابِ قَلِيْلًا اِنَّكُمْ عَاۤٮِٕدُوْنَۘ

إِنَّا
بیشک ہم
كَاشِفُوا۟
ہٹانے والے ہیں
ٱلْعَذَابِ
عذاب کو
قَلِيلًاۚ
تھوڑا سا
إِنَّكُمْ
بیشک تم
عَآئِدُونَ
لوٹنے والے ہو

تفسیر کمالین شرح اردو تفسیر جلالین:

ہم ذرا عذاب ہٹائے دیتے ہیں، تم لوگ پھر وہی کچھ کرو گے جو پہلے کر رہے تھے

ابوالاعلی مودودی Abul A'ala Maududi

ہم ذرا عذاب ہٹائے دیتے ہیں، تم لوگ پھر وہی کچھ کرو گے جو پہلے کر رہے تھے

احمد رضا خان Ahmed Raza Khan

ہم کچھ دنوں کو عذاب کھولے دیتے ہیں تم پھر وہی کرو گے

احمد علی Ahmed Ali

ہم اس عذاب کو تھوڑی دیر کے لیےہٹا دیں گے تم پھر وہی کرنے والے ہو

أحسن البيان Ahsanul Bayan

ہم عذاب کو تھوڑا دور کر دیں گے تو تم پھر اپنی سی حالت پر آجاؤ گے۔

جالندہری Fateh Muhammad Jalandhry

ہم تو تھوڑے دنوں عذاب ٹال دیتے ہیں (مگر) تم پھر کفر کرنے لگتے ہو

محمد جوناگڑھی Muhammad Junagarhi

ہم عذاب کو تھوڑا دور کردیں گے تو تم پھر اپنی اسی حالت پر آجاؤ گے

محمد حسین نجفی Muhammad Hussain Najafi

بےشک (اگر) ہم کچھ وقت کیلئے یہ عذاب ہٹا بھی دیں تو تم لوگ لوٹ کر وہی کچھ کرو گے جو پہلے کرتے تھے۔

علامہ جوادی Syed Zeeshan Haitemer Jawadi

خیر ہم تھوڑی دیر کے لئے عذاب کو ہٹالیتے ہیں لیکن تم پھر وہی کرنے والے ہو جو کررہے ہو

طاہر القادری Tahir ul Qadri

بیشک ہم تھوڑا سا عذاب دور کئے دیتے ہیں تم یقیناً (وہی کفر) دہرانے لگو گے،