Skip to main content
bismillah
تَنزِيلُ
نازل کرنا ہے
ٱلْكِتَٰبِ
کتاب کا
مِنَ
سے
ٱللَّهِ
اللہ کی طرف
ٱلْعَزِيزِ
جو غالب ہے،
ٱلْحَكِيمِ
حکمت والا ہے

اِس کتاب کا نزول اللہ زبردست اور دانا کی طرف سے ہے

تفسير
إِنَّآ
بیشک ہم نے
أَنزَلْنَآ
نازل کی ہم نے
إِلَيْكَ
آپ کی طرف
ٱلْكِتَٰبَ
کتاب
بِٱلْحَقِّ
حق کے ساتھ
فَٱعْبُدِ
پس عبادت کیجئے
ٱللَّهَ
اللہ کی
مُخْلِصًا
خالص کرتے ہوئے
لَّهُ
اس کے لئے
ٱلدِّينَ
دین کو

(اے محمدؐ) یہ کتاب ہم نے تمہاری طرف برحق نازل کی ہے، لہٰذا تم اللہ ہی کی بندگی کرو دین کو اُسی کے لیے خالص کرتے ہوئے

تفسير
أَلَا
خبردار
لِلَّهِ
اللہ کے لئے ہے
ٱلدِّينُ
دین
ٱلْخَالِصُۚ
خالص
وَٱلَّذِينَ
اور وہ لوگ
ٱتَّخَذُوا۟
جنہوں نے بنا رکھا ہے
مِن
سے
دُونِهِۦٓ
اس کے سوا
أَوْلِيَآءَ
سرپرستوں کو (وہ کہتے ہیں)
مَا
نہیں
نَعْبُدُهُمْ
ہم عبادت کرتے ان کی
إِلَّا
مگر
لِيُقَرِّبُونَآ
تاکہ وہ قریب کریں ہم کو
إِلَى
طرف
ٱللَّهِ
اللہ کے
زُلْفَىٰٓ
قریب کرنا
إِنَّ
بیشک
ٱللَّهَ
اللہ تعالیٰ
يَحْكُمُ
فیصلہ کرے گا
بَيْنَهُمْ
ان کے درمیان
فِى
اس معاملے میں
مَا
جو
هُمْ
وہ
فِيهِ
اس میں
يَخْتَلِفُونَۗ
اختلاف کرتے ہیں
إِنَّ
بیشک
ٱللَّهَ
اللہ
لَا
نہیں
يَهْدِى
ہدایت دیتا
مَنْ
اسے
هُوَ
کوئی ہو وہ جو
كَٰذِبٌ
جھوٹا
كَفَّارٌ
ناشکرا/ سخت منکر حق

خبردار، دین خالص اللہ کا حق ہے رہے وہ لوگ جنہوں نے اُس کے سوا دوسرے سرپرست بنا رکھے ہیں (اور اپنے اِس فعل کی توجیہ یہ کرتے ہیں کہ) ہم تو اُن کی عبادت صرف اس لیے کرتے ہیں کہ وہ اللہ تک ہماری رسائی کرا دیں، اللہ یقیناً اُن کے درمیان اُن تمام باتوں کا فیصلہ کر دے گا جن میں وہ اختلاف کر رہے ہیں اللہ کسی ایسے شخص کو ہدایت نہیں دیتا جو جھوٹا اور منکر حق ہو

تفسير
لَّوْ
اگر
أَرَادَ
ارادہ کرتا/ چاہتا
ٱللَّهُ
اللہ
أَن
کہ
يَتَّخِذَ
بنالے
وَلَدًا
اولاد
لَّٱصْطَفَىٰ
البتہ چن لیتا
مِمَّا
اس میں سے جو
يَخْلُقُ
وہ پیدا کرتا ہے
مَا
جو
يَشَآءُۚ
وہ چاہتا
سُبْحَٰنَهُۥۖ
پاک ہے وہ
هُوَ
وہ
ٱللَّهُ
اللہ
ٱلْوَٰحِدُ
ایک ہے،
ٱلْقَهَّارُ
زبردست ہے/سب پر غالب ہے

اگر اللہ کسی کو بیٹا بنانا چاہتا تو اپنی مخلوق میں سے جس کو چاہتا برگزیدہ کر لیتا، پاک ہے وہ اس سے (کہ کوئی اُس کا بیٹا ہو)، وہ اللہ ہے اکیلا اور سب پر غالب

تفسير
خَلَقَ
اس نے پیدا کیا
ٱلسَّمَٰوَٰتِ
آسمانوں کو
وَٱلْأَرْضَ
اور زمین کو
بِٱلْحَقِّۖ
حق کے ساتھ
يُكَوِّرُ
ڈھانپتا ہے
ٱلَّيْلَ
رات کو
عَلَى
پر
ٱلنَّهَارِ
دن
وَيُكَوِّرُ
اور ڈھانپتا ہے
ٱلنَّهَارَ
دن کو
عَلَى
پر
ٱلَّيْلِۖ
رات
وَسَخَّرَ
اور اس نے مسخر کر رکھا ہے
ٱلشَّمْسَ
سورج کو
وَٱلْقَمَرَۖ
اور چاند کو
كُلٌّ
سب کے سب
يَجْرِى
چل رہے ہیں
لِأَجَلٍ
مدت تک کے لئے
مُّسَمًّىۗ
ایک مقرر
أَلَا
خبردار
هُوَ
وہی
ٱلْعَزِيزُ
زبردست ہے،
ٱلْغَفَّٰرُ
بہت بخشش فرمانے والا

اس نے آسمانوں اور زمین کو برحق پیدا کیا ہے وہی دن پر رات اور رات پر دن کو لپیٹتا ہے اُسی نے سورج اور چاند کو اس طرح مسخر کر رکھا ہے کہ ہر ایک ایک وقت مقرر تک چلے جا رہا ہے جان رکھو، وہ زبردست ہے اور درگزر کرنے والا ہے

تفسير
خَلَقَكُم
اس نے پیدا کیا تم کو
مِّن
سے
نَّفْسٍ
جان
وَٰحِدَةٍ
ایک
ثُمَّ
پھر
جَعَلَ
بنایا اس سے
مِنْهَا
اس کا
زَوْجَهَا
جوڑا
وَأَنزَلَ
اور اس نے اتارے
لَكُم
تمہارے لئے
مِّنَ
میں سے
ٱلْأَنْعَٰمِ
مویشیوں
ثَمَٰنِيَةَ
آٹھ
أَزْوَٰجٍۚ
جوڑے
يَخْلُقُكُمْ
پیدا کرتا ہے تم کو
فِى
میں
بُطُونِ
پیٹوں
أُمَّهَٰتِكُمْ
تمہاری ماؤں کے
خَلْقًا
ایک تخلیق کو
مِّنۢ
بَعْدِ
بعد
خَلْقٍ
ایک تخلیق کے
فِى
میں
ظُلُمَٰتٍ
اندھیروں
ثَلَٰثٍۚ
تین
ذَٰلِكُمُ
یہ ہے
ٱللَّهُ
اللہ
رَبُّكُمْ
رب تمہارا
لَهُ
اسی کے لئے ہے
ٱلْمُلْكُۖ
بادشاہت
لَآ
نہیں
إِلَٰهَ
کوئی الٰہ برحق
إِلَّا
مگر
هُوَۖ
وہی
فَأَنَّىٰ
تو کہاں سے/ کیونکر
تُصْرَفُونَ
تم پھیرائے جاتے ہو

اُسی نے تم کو ایک جان سے پیدا کیا، پھر وہی ہے جس نے اُس جان سے اس کا جوڑا بنایا اور اسی نے تمہارے لیے مویشیوں میں سے آٹھ نر و مادہ پیدا کیے وہ تمہاری ماؤں کے پیٹوں میں تین تین تاریک پردوں کے اندر تمہیں ایک کے بعد ایک شکل دیتا چلا جاتا ہے یہی اللہ (جس کے یہ کام ہیں) تمہارا رب ہے، بادشاہی اسی کی ہے، کوئی معبود اس کے سوا نہیں ہے، پھر تم کدھر سے پھرائے جا رہے ہو؟

تفسير
إِن
اگر
تَكْفُرُوا۟
تم کفر کروگے/ ناشکری کرو گے
فَإِنَّ
تو بیشک
ٱللَّهَ
اللہ تعالیٰ
غَنِىٌّ
بےنیاز ہے
عَنكُمْۖ
تم سے
وَلَا
اور نہیں
يَرْضَىٰ
وہ پسند کرتا
لِعِبَادِهِ
اپنے بندوں کے لئے
ٱلْكُفْرَۖ
کفر کو
وَإِن
اور اگر
تَشْكُرُوا۟
تم شکر کرو گے
يَرْضَهُ
پسند کرتا ہے اس کو
لَكُمْۗ
تمہارے لئے
وَلَا
اور نہیں
تَزِرُ
بوجھ اٹھائے گا
وَازِرَةٌ
کوئی بوجھ اٹھانے والا
وِزْرَ
بوجھ
أُخْرَىٰۗ
دوسرے کا
ثُمَّ
پھر
إِلَىٰ
طرف
رَبِّكُم
اپنے رب کی
مَّرْجِعُكُمْ
لوٹنا ہے تمہارا
فَيُنَبِّئُكُم
پھر وہ بتائے گا تم کو
بِمَا
ساتھ اس کے
كُنتُمْ
جو تھے تم
تَعْمَلُونَۚ
تم عمل کرتے
إِنَّهُۥ
بیشک
عَلِيمٌۢ
وہ جاننے والا ہے
بِذَاتِ
بھید
ٱلصُّدُورِ
سینوں کے

اگر تم کفر کرو تو اللہ تم سے بے نیاز ہے، لیکن وہ اپنے بندوں کے لیے کفر کو پسند نہیں کرتا، اور اگر تم شکر کر و تو اسے وہ تمہارے لیے پسند کرتا ہے کوئی بوجھ اٹھانے والا کسی دوسرے کا بوجھ نہ اٹھائے گا آخرکار تم سب کو اپنے رب کی طرف پلٹنا ہے، پھر وہ تمہیں بتا دے گا کہ تم کیا کرتے رہے ہو، وہ تو دلوں کا حال تک جانتا ہے

تفسير
وَإِذَا
اور جب
مَسَّ
چھو جاتی ہے
ٱلْإِنسَٰنَ
انسان کو
ضُرٌّ
کوئی تکلیف
دَعَا
پکارتا ہے
رَبَّهُۥ
اپنے رب کو
مُنِيبًا
رجوع کرتے ہوئے
إِلَيْهِ
اس کی طرف
ثُمَّ
پھر
إِذَا
جب
خَوَّلَهُۥ
وہ عطا کردیتا ہے اس کو
نِعْمَةً
کوئی نعمت
مِّنْهُ
اپنی طرف سے
نَسِىَ
بھول جاتا ہے
مَا
جو
كَانَ
تھا اس نے
يَدْعُوٓا۟
پکارا
إِلَيْهِ
طرف اس کے
مِن
اس سے
قَبْلُ
پہلے
وَجَعَلَ
اور اس نے بنا ڈالے
لِلَّهِ
اللہ کے لئے
أَندَادًا
کچھ شریک
لِّيُضِلَّ
تاکہ بھٹکادیں
عَن
سے
سَبِيلِهِۦۚ
اس کے راستے
قُلْ
کہہ دیجئے
تَمَتَّعْ
فائدہ اٹھالو
بِكُفْرِكَ
اپنے کفر کے ساتھ
قَلِيلًاۖ
تھوڑا سا
إِنَّكَ
بیشک تو
مِنْ
میں سے ہے
أَصْحَٰبِ
والوں
ٱلنَّارِ
آگ

انسان پر جب کوئی آفت آتی ہے تو وہ اپنے رب کی طرف رجوع کر کے اُسے پکارتا ہے پھر جب اس کا رب اسے اپنی نعمت سے نواز دیتا ہے تو وہ اُس مصیبت کو بھول جاتا ہے جس پر وہ پہلے پکار رہا تھا اور دوسروں کو اللہ کا ہمسر ٹھیراتا ہے تاکہ اُس کی راہ سے گمراہ کرے (اے نبیؐ) اُس سے کہو کہ تھوڑے دن اپنے کفر سے لطف اٹھا لے، یقیناً تو دوزخ میں جانے والا ہے

تفسير
أَمَّنْ
کیا بھلا
هُوَ
وہ جو
قَٰنِتٌ
بندگی کرنے والا ہے
ءَانَآءَ
گھڑیوں میں
ٱلَّيْلِ
رات کی
سَاجِدًا
سجدہ کرنے والا ہے
وَقَآئِمًا
اور قیام کرنے والا ہے
يَحْذَرُ
ڈرتا ہے
ٱلْءَاخِرَةَ
آخرت سے
وَيَرْجُوا۟
اور امید رکھتا ہے
رَحْمَةَ
رحمت کی
رَبِّهِۦۗ
اپنے رب کی
قُلْ
کہہ دیجئے
هَلْ
کیا
يَسْتَوِى
برابر ہوسکتے ہیں
ٱلَّذِينَ
وہ لو گ
يَعْلَمُونَ
جو علم رکھتے ہیں
وَٱلَّذِينَ
اور وہ لوگ
لَا
نہیں
يَعْلَمُونَۗ
جو علم رکھتے
إِنَّمَا
بیشک
يَتَذَكَّرُ
نصیحت پکڑتے ہیں
أُو۟لُوا۟
والے
ٱلْأَلْبَٰبِ
عقل

(کیا اِس شخص کی روش بہتر ہے یا اُس شخص کی) جو مطیع فرمان ہے، رات کی گھڑیوں میں کھڑا رہتا اور سجدے کرتا ہے، آخرت سے ڈرتا اور اپنے رب کی رحمت سے امید لگاتا ہے؟ اِن سے پوچھو، کیا جاننے والے اور نہ جاننے والے دونوں کبھی یکساں ہو سکتے ہیں؟ نصیحت تو عقل رکھنے والے ہی قبول کرتے ہیں

تفسير
قُلْ
کہہ دیجئے
يَٰعِبَادِ
اے میرے بندو،
ٱلَّذِينَ
وہ جو
ءَامَنُوا۟
ایمان لائے ہو
ٱتَّقُوا۟
ڈرو
رَبَّكُمْۚ
اپنے رب سے
لِلَّذِينَ
ان لوگوں کے لئے
أَحْسَنُوا۟
جنہوں نے اچھا کیا
فِى
میں
هَٰذِهِ
اس
ٱلدُّنْيَا
دنیا
حَسَنَةٌۗ
بھلائی ہے
وَأَرْضُ
اور زمین
ٱللَّهِ
اللہ کی
وَٰسِعَةٌۗ
وسیع ہے
إِنَّمَا
بیشک
يُوَفَّى
پورا کرکے دیئے جائیں گے
ٱلصَّٰبِرُونَ
صبر کرنے والے
أَجْرَهُم
اجر اپنا
بِغَيْرِ
بغیر
حِسَابٍ
حساب کے/ بےحساب

(اے نبیؐ) کہو کہ اے میرے بندو جو ایمان لائے ہو، اپنے رب سے ڈرو جن لوگوں نے اِس دنیا میں نیک رویہ اختیار کیا ہے ان کے لیے بھلائی ہے اور خدا کی زمین وسیع ہے، صبر کرنے والوں کو تو ان کا اجر بے حساب دیا جائے گا

تفسير
کے بارے میں معلومات :
الزمر
القرآن الكريم:الزمر
آية سجدہ (سجدة):-
سورۃ کا نام (latin):Az-Zumar
سورہ نمبر:39
کل آیات:75
کل کلمات:1270
کل حروف:4908
کل رکوعات:8
مقام نزول:مکہ مکرمہ
ترتیب نزولی:59
آیت سے شروع:4058