Skip to main content
ARBNDEENIDTRUR
bismillah

تَبٰـرَكَ الَّذِىْ نَزَّلَ الْـفُرْقَانَ عَلٰى عَبْدِهٖ لِيَكُوْنَ لِلْعٰلَمِيْنَ نَذِيْرًا ۙ

تَبٰرَكَ الَّذِيْ
بہت بابرکت ہے وہ ذات
نَزَّلَ الْفُرْقَانَ
جس نے نازل کیا فرقان
عَلٰي عَبْدِهٖ
اپنے بندے پر
لِيَكُوْنَ
تاکہ وہ ہوجائے
لِلْعٰلَمِيْنَ نَذِيْرَۨا
جہان والوں کے لیے خبردار کرنے والا

نہایت متبرک ہے وہ جس نے یہ فرقان اپنے بندے پر نازل کیا تاکہ سارے جہان والوں کے لیے نذیر ہو

تفسير

لَّذِىْ لَهٗ مُلْكُ السَّمٰوٰتِ وَالْاَرْضِ وَلَمْ يَتَّخِذْ وَلَدًا وَّلَمْ يَكُنْ لَّهٗ شَرِيْكٌ فِى الْمُلْكِ وَخَلَقَ كُلَّ شَىْءٍ فَقَدَّرَهٗ تَقْدِيْرًا

الَّذِيْ
وہ ذات
لَهٗ
اسی کے لیے ہے
مُلْكُ السَّمٰوٰتِ
بادشاہت آسمانوں کی
وَالْاَرْضِ
اور زمین کی
وَلَمْ يَتَّخِذْ
اور نہیں اس نے بنایا
وَلَدًا
کوئی بیٹا
وَّلَمْ
اور نہیں
يَكُنْ لَّهُ
ہے اس کے لیے
شَرِيْكٌ
کوئی شریک
فِي الْمُلْكِ
بادشاہت میں
وَخَلَقَ
اور اس نے پیدا کیا
كُلَّ شَيْءٍ
ہر چیز کو
فَقَدَّرَهٗ تَقْدِيْرًا
پھر تقدیر مقرر کی اس کی۔ تقدیر مقرر کرنا۔ تقدیر بنانا

وہ جو زمین اور آسمانوں کی بادشاہی کا مالک ہے، جس نے کسی کو بیٹا نہیں بنایا ہے، جس کے ساتھ بادشاہی میں کوئی شریک نہیں ہے، جس نے ہر چیز کو پیدا کیا پھر اس کی ایک تقدیر مقرر کی

تفسير

وَاتَّخَذُوْا مِنْ دُوْنِهٖۤ اٰلِهَةً لَّا يَخْلُقُوْنَ شَيْـًٔـا وَّهُمْ يُخْلَقُوْنَ وَلَا يَمْلِكُوْنَ لِاَنْفُسِهِمْ ضَرًّا وَّلَا نَفْعًا وَّلَا يَمْلِكُوْنَ مَوْتًا وَّلَا حَيٰوةً وَّلَا نُشُوْرًا

وَاتَّخَذُوْا
اور انہوں نے بنا رکھے ہیں۔ بنا لیے
مِنْ دُوْنِهٖٓ
اس کے سوا سے
اٰلِهَةً
کچھ الہ
لَّا يَخْلُقُوْنَ
نہیں وہ پیدا کرتے
شَـيْـــــًٔا
کوئی چیز
وَّهُمْ يُخْلَقُوْنَ
اور وہ پیدا کیے جاتے ہیں
وَلَا يَمْلِكُوْنَ
اور نہیں وہ مالک ہوسکتے
لِاَنْفُسِهِمْ
اپنے نفسوں کے لیے
ضَرًّا
کسی نقصان کے
وَّلَا نَفْعًا
اور نہ نفع کے
وَّلَا يَمْلِكُوْنَ
اور نہیں وہ مالک ہوسکتے
مَوْتًا
موت کے
وَّلَا حَيٰوةً
اور نہ زندگی کے
وَّلَا
اور نہ
نُشُوْرًا
دوبارہ جی اٹھنے کے

لوگوں نے اُسے چھوڑ کر ایسے معبود بنا لیے جو کسی چیز کو پیدا نہیں کرتے بلکہ خود پیدا کیے جاتے ہیں، جو خود اپنے لیے بھی کسی نفع یا نقصان کا اختیار نہیں رکھتے، جو نہ مار سکتے ہیں نہ جِلا سکتے ہیں، نہ مرے ہوئے کو پھر اٹھا سکتے ہیں

تفسير

وَقَالَ الَّذِيْنَ كَفَرُوْۤا اِنْ هٰذَاۤ اِلَّاۤ اِفْكٌ ِفْتَـرٰٮهُ وَاَعَانَهٗ عَلَيْهِ قَوْمٌ اٰخَرُوْنَ ۚ فَقَدْ جَاۤءُوْ ظُلْمًا وَّزُوْرًا ۚ

وَقَالَ الَّذِيْنَ
اور کہا ان لوگوں نے، جنہوں نے
كَفَرُوْٓا
کفر کیا
اِنْ ھٰذَآ
نہیں یہ
اِلَّآ
مگر
اِفْكُۨ
ایک جھوٹ۔ من گھڑت چیز
افْتَرٰىهُ
اس نے گھڑ لیا اس کو
وَاَعَانَهٗ
اور مدد کی اس کی
عَلَيْهِ
اس پر
قَوْمٌ اٰخَرُوْنَ ڔ
ایک دوسری قوم نے
فَقَدْ
پس تحقیق
جَاۗءُوْ
وہ لائے
ظُلْمًا وَّزُوْرًا
ظلم اور جھوٹ

جن لوگوں نے نبیؐ کی بات ماننے سے انکار کر دیا ہے وہ کہتے ہیں کہ یہ فرقان ایک من گھڑت چیز ہے جسے اِس شخص نے آپ ہی گھڑ لیا ہے اور کچھ دوسرے لوگوں نے اِس کام میں اس کی مدد کی ہے بڑا ظلم اور سخت جھوٹ ہے جس پر یہ لوگ اتر آئے ہیں

تفسير

وَقَالُوْۤا اَسَاطِيْرُ الْاَوَّلِيْنَ اكْتَتَبَهَا فَهِىَ تُمْلٰى عَلَيْهِ بُكْرَةً وَّاَصِيْلًا

وَقَالُوْٓا
اور انہوں نے کہا
اَسَاطِيْرُ
کہانیاں ہیں
الْاَوَّلِيْنَ
پہلوں کی
اكْتَتَبَهَا
اس نے اس کو لکھوا لیا ہے۔ اس نے اس کو گھڑ کر لکھا ہے
فَهِيَ
تو وہ
تُمْلٰى
املاء کی جاتی ہیں۔ نقل کرائی جاتی ہیں
عَلَيْهِ
اس پر
بُكْرَةً
صبح
وَّاَصِيْلًا
اور شام

کہتے ہیں یہ پرانے لوگوں کی لکھی ہوئی چیزیں ہیں جنہیں یہ شخص نقل کرتا ہے اور وہ اِسے صبح و شام سنائی جاتی ہیں

تفسير

قُلْ اَنْزَلَهُ الَّذِىْ يَعْلَمُ السِّرَّ فِى السَّمٰوٰتِ وَالْاَرْضِۗ اِنَّهٗ كَانَ غَفُوْرًا رَّحِيْمًا

قُلْ
کہہ دیجیے
اَنْزَلَهُ الَّذِيْ
نازل کیا ہے اس کو اس ذات نے
يَعْلَمُ السِّرَّ
جو جانتا ہے چھپی بات کو
فِي السَّمٰوٰتِ
آسمانوں میں
وَالْاَرْضِ ۭ
اور زمین میں
اِنَّهٗ
بیشک وہ
كَانَ
ہے
غَفُوْرًا
غفور
رَّحِيْمًا
رحیم

اے محمدؐ، ان سے کہو کہ "اِسے نازل کیا ہے اُس نے جو زمین اور آسمانوں کا بھید جانتا ہے" حقیقت یہ ہے کہ وہ بڑا غفور رحیم ہے

تفسير

وَقَالُوْا مَالِ هٰذَا الرَّسُوْلِ يَأْكُلُ الطَّعَامَ وَيَمْشِىْ فِى الْاَسْوَاقِ ۗ لَوْلَاۤ اُنْزِلَ اِلَيْهِ مَلَكٌ فَيَكُوْنَ مَعَهٗ نَذِيْرًا ۙ

وَقَالُوْا
اور انہوں نے کہا
مَالِ ھٰذَا الرَّسُوْلِ
کیا ہے اس رسول کو
يَاْكُلُ
کھاتا ہے
الطَّعَامَ
کھانا
وَيَمْشِيْ فِي الْاَسْوَاقِ ۭ
اور چلتا ہے بازاروں میں
لَوْلَآ
کیوں نہیں
اُنْزِلَ
نازل کیا گیا
اِلَيْهِ
اس کی طرف
مَلَكٌ
کوئی فرشتہ
فَيَكُوْنَ
تو ہوتا
مَعَهٗ نَذِيْرًا
اس کے ساتھ خبردار کرنے والا

کہتے ہیں "یہ کیسا رسول ہے جو کھانا کھاتا ہے اور بازاروں میں چلتا پھرتا ہے؟ کیوں نہ اس کے پاس کوئی فرشتہ بھیجا گیا جو اس کے ساتھ رہتا اور (نہ ماننے والوں کو) دھمکاتا؟

تفسير

اَوْ يُلْقٰۤى اِلَيْهِ كَنْزٌ اَوْ تَكُوْنُ لَهٗ جَنَّةٌ يَّأْكُلُ مِنْهَا ۗ وَقَالَ الظّٰلِمُوْنَ اِنْ تَتَّبِعُوْنَ اِلَّا رَجُلًا مَّسْحُوْرًا

اِلَيْهِ
کوئی خزانہ
كَنْزٌ
یا ہوتا
اَوْ تَكُوْنُ
اس کے لیے کوئی باغ
لَهٗ جَنَّةٌ
کہ کھاتا اس (میں) سے
يَّاْكُلُ مِنْهَا ۭ
اور کہا ظالموں نے
وَقَالَ الظّٰلِمُوْنَ
نہیں تم پیروی کرتے
اِنْ تَتَّبِعُوْنَ
مگر ایک شخص کی
اِلَّا رَجُلًا
جو سحر زدہ ہے
مَّسْحُوْرًا
جو سحر زدہ ہے

یا اور کچھ نہیں تو اِس کے لیے کوئی خزانہ ہی اتار دیا جاتا، یا اس کے پاس کوئی باغ ہی ہوتا جس سے یہ (اطمینان کی) روزی حاصل کرتا" اور ظالم کہتے ہیں "تم لوگ تو ایک سحر زدہ آدمی کے پیچھے لگ گئے ہو"

تفسير

اُنْظُرْ كَيْفَ ضَرَبُوْا لَـكَ الْاَمْثَالَ فَضَلُّوْا فَلَا يَسْتَطِيْعُوْنَ سَبِيْلاً

اُنْظُرْ
دیکھو
كَيْفَ
کس طرح
ضَرَبُوْا
انہوں نے بیان کیں
لَكَ الْاَمْثَالَ
تیرے لیے مثالیں
فَضَلُّوْا
تو وہ بھٹک گئے
فَلَا يَسْتَطِيْعُوْنَ
تو نہیں وہ استطاعت رکھتے
سَبِيْلًا
راستے کی

دیکھو، کیسی کیسی عجیب حجتیں یہ لوگ تمہارے آگے پیش کر رہے ہیں، ایسے بہکے ہیں کہ کوئی ٹھکانے کی بات اِن کو نہیں سوجھتی

تفسير

تَبٰـرَكَ الَّذِىْۤ اِنْ شَاۤءَ جَعَلَ لَكَ خَيْرًا مِّنْ ذٰلِكَ جَنّٰتٍ تَجْرِىْ مِنْ تَحْتِهَا الْاَنْهٰرُ ۙ وَيَجْعَلْ لَّكَ قُصُوْرًا

تَبٰرَكَ
بہت بابرکت ہے
الَّذِيْٓ
وہ ذات
اِنْ شَاۗءَ
اگر وہ چاہے
جَعَلَ
بنائے
لَكَ
تیرے لیے
خَيْرًا
بہتر
مِّنْ ذٰلِكَ
اس سے
جَنّٰتٍ
باغات
تَجْرِيْ
بہتی ہو
مِنْ تَحْتِهَا الْاَنْهٰرُ ۙ
ان کے نیچے سے نہریں
وَيَجْعَلْ
اور بنائے
لَّكَ
تیرے لیے
قُصُوْرًا
محلات

بڑا بابرکت ہے وہ جو اگر چاہے تو ان کی تجویز کردہ چیزوں سے بھی زیادہ بڑھ چڑھ کر تم کو دے سکتا ہے، (ایک نہیں) بہت سے باغ جن کے نیچے نہریں بہتی ہوں، اور بڑے بڑے محل

تفسير
کے بارے میں معلومات :
الفرقان
القرآن الكريم:الفرقان
آية سجدہ (سجدة):60
سورۃ کا نام (latin):Al-Furqan
سورہ نمبر:25
کل آیات:77
کل کلمات:892
کل حروف:3730
کل رکوعات:6
مقام نزول:مکہ مکرمہ
ترتیب نزولی:42
آیت سے شروع:2855