Skip to main content
ARBNDEENIDTRUR
bismillah

اِقْتَـرَبَتِ السَّاعَةُ وَانْشَقَّ الْقَمَرُ

اِقْتَرَبَتِ السَّاعَةُ
قریب آگئی قیامت
وَانْشَقَّ الْقَمَرُ
اور شق ہوگیا چاند

قیامت کی گھڑی قریب آ گئی اور چاند پھٹ گیا

تفسير

وَاِنْ يَّرَوْا اٰيَةً يُّعْرِضُوْا وَيَقُوْلُوْا سِحْرٌ مُّسْتَمِرٌّ

وَاِنْ يَّرَوْا
اور اگر وہ دیکھ لیں
اٰيَةً
کوئی بھی نشانی
يُّعْرِضُوْا
منہ موڑ جاتے ہیں
وَيَقُوْلُوْا
اور کہتے ہیں
سِحْرٌ مُّسْتَمِرٌّ
جادو ہے گزرنے والا۔ جاری رہنے والا۔ مسلسل

مگر اِن لوگوں کا حال یہ ہے کہ خواہ کوئی نشانی دیکھ لیں منہ موڑ جاتے ہیں اور کہتے ہیں یہ تو چلتا ہوا جادو ہے

تفسير

وَكَذَّبُوْا وَاتَّبَعُوْۤا اَهْوَاۤءَهُمْ وَكُلُّ اَمْرٍ مُّسْتَقِرٌّ

وَكَذَّبُوْا
اور انہوں نے جھٹلایا
وَاتَّبَعُوْٓا
اور پیروی کی
اَهْوَاۗءَهُمْ
اپنی خواہشات کی
وَكُلُّ
اور ہر
اَمْرٍ مُّسْتَقِرٌّ
کام کا وقت مقرر ہے

اِنہوں نے (اس کو بھی) جھٹلا دیا اور اپنی خواہشات نفس ہی کی پیروی کی ہر معاملہ کو آخر کار ایک انجام پر پہنچ کر رہنا ہے

تفسير

وَلَقَدْ جَاۤءَهُمْ مِّنَ الْاَنْۢبَاۤءِ مَا فِيْهِ مُزْدَجَرٌۙ

وَلَقَدْ جَاۗءَهُمْ
اور البتہ تحقیق آئیں ان کے پاس
مِّنَ الْاَنْۢبَاۗءِ
خبروں میں سے
مَا فِيْهِ
جو اس میں
مُزْدَجَرٌ
ڈانٹنا ہے۔ کافی تنبیہ ہے

اِن لوگوں کے سامنے (پچھلی قوموں کے) وہ حالات آ چکے ہیں جن میں سرکشی سے باز رکھنے کے لیے کافی سامان عبرت ہے

تفسير

حِكْمَةٌ  ۢ بَالِغَةٌ فَمَا تُغْنِ النُّذُرُۙ

فَمَا
کام آئے ڈراوے
تُغْنِ النُّذُرُ
کام آئے ڈراوے

اور ایسی حکمت جو نصیحت کے مقصد کو بدرجہ اتم پورا کرتی ہے مگر تنبیہات اِن پر کارگر نہیں ہوتیں

تفسير

فَتَوَلَّ عَنْهُمْۘ يَوْمَ يَدْعُ الدَّاعِ اِلٰى شَىْءٍ نُّكُرٍۙ

فَتَوَلَّ عَنْهُمْ ۘ
تو منہ پھیر لو ان سے
يَوْمَ يَدْعُ
جس دن پکارے گا
الدَّاعِ
پکارنے والا
اِلٰى
طرف
شَيْءٍ
ایک چیز کے
نُّكُرٍ
انجان

پس اے نبیؐ، اِن سے رخ پھیر لو جس روز پکارنے والا ایک سخت ناگوار چیز کی طرف پکارے گا

تفسير

خُشَّعًا اَبْصَارُهُمْ يَخْرُجُوْنَ مِنَ الْاَجْدَاثِ كَاَنَّهُمْ جَرَادٌ مُّنْتَشِرٌۙ

خُشَّعًا
جھکی ہوئی ہوں گی
اَبْصَارُهُمْ
ان کی نگاہیں
يَخْرُجُوْنَ
نکلیں گے
مِنَ الْاَجْدَاثِ
قبروں سے
كَاَنَّهُمْ
گویا کہ وہ
جَرَادٌ مُّنْتَشِرٌ
ٹڈیاں ہیں پھیلی ہوئیں

لوگ سہمی ہوئی نگاہوں کے ساتھ اپنی قبروں سے اِس طرح نکلیں گے گویا وہ بکھری ہوئی ٹڈیاں ہیں

تفسير

مُّهْطِعِيْنَ اِلَى الدَّاعِۗ يَقُوْلُ الْكٰفِرُوْنَ هٰذَا يَوْمٌ عَسِرٌ

مُّهْطِعِيْنَ
دوڑنے والے ہیں
اِلَى
طرف
الدَّاعِ ۭ
پکارنے والے کے
يَقُوْلُ الْكٰفِرُوْنَ
کہیں گے کافر
ھٰذَا يَوْمٌ عَسِرٌ
یہ دن ہے سخت

پکارنے والے کی طرف دوڑے جا رہے ہوں گے اور وہی منکرین (جو دنیا میں اس کا انکار کرتے تھے) اُس وقت کہیں گے کہ یہ دن تو بڑا کٹھن ہے

تفسير

كَذَّبَتْ قَبْلَهُمْ قَوْمُ نُوْحٍ فَكَذَّبُوْا عَبْدَنَا وَقَالُوْا مَجْنُوْنٌ وَّازْدُجِرَ

كَذَّبَتْ
جھٹلایا
قَبْلَهُمْ
ان سے پہلے
قَوْمُ نُوْحٍ
قوم نوح نے
فَكَذَّبُوْا عَبْدَنَا
تو انہوں نے جھٹلایا ہمارے بندے کو
وَقَالُوْا
اور انہوں نے کہا
مَجْنُوْنٌ
مجنون ہے
وَّازْدُجِرَ
اور ڈانٹا گیا۔ خوب دھمکی دیا گیا

اِن سے پہلے نوحؑ کی قوم جھٹلا چکی ہے اُنہوں نے ہمارے بندے کو جھوٹا قرار دیا اور کہا کہ یہ دیوانہ ہے، اور وہ بری طرح جھڑکا گیا

تفسير

فَدَعَا رَبَّهٗۤ اَنِّىْ مَغْلُوْبٌ فَانْـتَصِرْ

اَنِّىْ مَغْلُوْبٌ
پس بدلہ لے۔ انتقام لے
فَانْتَصِرْ
پس بدلہ لے۔ انتقام لے

آخر کار اُس نے اپنے رب کو پکارا کہ "میں مغلوب ہو چکا، اب تو اِن سے انتقام لے"

تفسير
کے بارے میں معلومات :
القمر
القرآن الكريم:القمر
آية سجدہ (سجدة):-
سورۃ کا نام (latin):Al-Qamar
سورہ نمبر:54
کل آیات:55
کل کلمات:342
کل حروف:1423
کل رکوعات:3
مقام نزول:مکہ مکرمہ
ترتیب نزولی:37
آیت سے شروع:4846