Skip to main content
ARBNDEENIDTRUR

قَالَ رَبِّ اجْعَلْ لِّىْۤ اٰيَةً ۗ قَالَ اٰيَتُكَ اَ لَّا تُكَلِّمَ النَّاسَ ثَلٰثَةَ اَيَّامٍ اِلَّا رَمْزًا ۗ وَاذْكُرْ رَّبَّكَ كَثِيْرًا وَّسَبِّحْ بِالْعَشِىِّ وَالْاِبْكَارِ

قَالَ
کہا
رَبِّ
اے میرے رب
اجْعَلْ
بنا
لِّيْٓ
میرے لیے
اٰيَةً ۭ
کوئی نشانی
قَالَ
کہا
اٰيَتُكَ
نشانی تیری
اَلَّا
کہ نہ
تُكَلِّمَ
تو کلام کرے گا
النَّاسَ
لوگوں سے
ثَلٰــثَةَ
تین
اَيَّامٍ
دن
اِلَّا
مگر
رَمْزًا ۭ
اشارے سے
وَ
اور
اذْكُرْ
اپنے رب کو
رَّبَّكَ
بہت زیادہ
كَثِيْرًا
اور
وَّ
تسبیح کرو
سَبِّحْ
شام کے وقت
بِالْعَشِيِّ
اور
وَ
صبح کے وقت
الْاِبْكَارِ
صبح کے وقت

عرض کیا "مالک! پھر کوئی نشانی میرے لیے مقرر فرما دے" کہا، "نشانی یہ ہے کہ تم تین دن تک لوگوں سے اشارہ کے سوا کوئی بات چیت نہ کرو گے (یا نہ کرسکو گے) اِس دوران میں اپنے رب کو بہت یاد کرنا اور صبح و شام اس کی تسبیح کرتے رہنا"

تفسير

وَاِذْ قَالَتِ الْمَلٰۤٮِٕكَةُ يٰمَرْيَمُ اِنَّ اللّٰهَ اصْطَفٰٮكِ وَطَهَّرَكِ وَاصْطَفٰٮكِ عَلٰى نِسَاۤءِ الْعٰلَمِيْنَ

وَ
اور
اِذْ
کہا
قَالَتِ
فرشتوں نے
الْمَلٰۗىِٕكَةُ
اے مریم
يٰمَرْيَمُ
بیشک
اِنَّ
اللہ تعالیٰ نے
اللّٰهَ
چن لیا تجھ کو
اصْطَفٰىكِ
اور
وَ
پاک کیا تجھ کو
طَهَّرَكِ
اور
وَ
چن لیا تجھ کو
اصْطَفٰىكِ
اوپرعورتوں کے
عَلٰي نِسَاۗءِ
تمام جہان کی
الْعٰلَمِيْنَ
تمام جہان کی

پھر وہ وقت آیا جب مریمؑ سے فرشتوں نے آکر کہا، "اے مریمؑ! اللہ نے تجھے برگزیدہ کیا اور پاکیزگی عطا کی اور تمام دنیا کی عورتوں پر تجھ کو ترجیح دے کر اپنی خدمت کے لیے چن لیا

تفسير

يٰمَرْيَمُ اقْنُتِىْ لِرَبِّكِ وَاسْجُدِىْ وَارْكَعِىْ مَعَ الرّٰكِعِيْنَ

يٰمَرْيَمُ
اے مریم
اقْنُتِىْ
تابعداری کر
لِرَبِّكِ
اپنے رب کی
وَ
اور
اسْجُدِيْ
اور
وَ
رکوع کر
ارْكَعِيْ
رکوع کرنے والوں کے ساتھ
مَعَ الرّٰكِعِيْنَ
رکوع کرنے والوں کے ساتھ

اے مریمؑ! اپنے رب کی تابع فرمان بن کر رہ، اس کے آگے سر بسجود ہو، اور جو بندے اس کے حضور جھکنے والے ہیں ان کے ساتھ تو بھی جھک جا"

تفسير

ذٰلِكَ مِنْ اَنْۢـبَاۤءِ الْغَيْبِ نُوْحِيْهِ اِلَيْكَۗ وَمَا كُنْتَ لَدَيْهِمْ اِذْ يُلْقُوْنَ اَقْلَامَهُمْ اَيُّهُمْ يَكْفُلُ مَرْيَمَۖ وَمَا كُنْتَ لَدَيْهِمْ اِذْ يَخْتَصِمُوْنَ

ذٰلِكَ
یہ
مِنْ اَنْۢبَاۗءِ الْغَيْبِ
غیب کی خبروں میں سے ہے
نُوْحِيْهِ
ہم وحی کرتے ہیں اس کو
اِلَيْكَ ۭ
تیری طرف
وَ
اور
مَا
نہ
كُنْتَ
تھا تو
لَدَيْهِمْ
ان کے پاس
اِذْ
جب
يُلْقُوْنَ
وہ ڈال رہے تھے
اَقْلَامَھُمْ
اپنی قلمیں
اَيُّھُمْ
کون سا ان میں سے
يَكْفُلُ
کفالت کرے گا
مَرْيَمَ ۠
مریم کی
وَ
اور
مَا
نہ
كُنْتَ
پاس ان کے
لَدَيْهِمْ
جب
اِذْ
وہ جگھڑ رہے تھے
يَخْتَصِمُوْنَ
وہ جگھڑ رہے تھے

اے محمدؐ! یہ غیب کی خبریں ہیں جو ہم تم کو وحی کے ذریعہ سے بتا رہے ہیں، ورنہ تم اُس وقت وہاں موجود نہ تھے جب ہیکل کے خادم یہ فیصلہ کرنے کے لیے کہ مریمؑ کا سر پرست کون ہو اپنے اپنے قلم پھینک رہے تھے، اور نہ تم اُس وقت حاضر تھے، جب اُن کے درمیان جھگڑا برپا تھا

تفسير

اِذْ قَالَتِ الْمَلٰۤٮِٕكَةُ يٰمَرْيَمُ اِنَّ اللّٰهَ يُبَشِّرُكِ بِكَلِمَةٍ مِّنْهُ ۖ اسْمُهُ الْمَسِيْحُ عِيْسَى ابْنُ مَرْيَمَ وَجِيْهًا فِى الدُّنْيَا وَالْاٰخِرَةِ وَمِنَ الْمُقَرَّبِيْنَۙ

اِذْ
جب
قَالَتِ
کہا
الْمَلٰۗىِٕكَةُ
فرشتوں نے
يٰمَرْيَمُ
اے مریم
اِنَّ
بیشک
اللّٰهَ
اللہ تعالیٰ
يُبَشِّرُكِ
خوش خبری دیتا ہے
بِكَلِمَةٍ
ایک کلمے کی
مِّنْهُ ڰ
اپنی طرف سے
اسْمُهُ
نام اس کا
الْمَسِيْحُ
مسیح
عِيْسَى ابْنُ مَرْيَمَ
عیسیٰ ابن مریم
وَجِيْهًا
عزت والا۔ بلندی والا۔ ذی وجاہت
فِي
میں
الدُّنْيَا
دنیا
وَ
اور
الْاٰخِرَةِ
آخرت میں
وَ
اور
مِنَ الْمُقَرَّبِيْنَ
مقرب بندوں میں سے ہوگا

اور جب فرشتوں نے کہا، "اے مریمؑ! اللہ تجھے اپنے ایک فرمان کی خوش خبری دیتا ہے اُس کا نام مسیح عیسیٰ ابن مریم ہوگا، دنیا اور آخرت میں معزز ہوگا، اللہ کے مقرب بندوں میں شمار کیا جائے گا

تفسير

وَيُكَلِّمُ النَّاسَ فِى الْمَهْدِ وَكَهْلًا وَّمِنَ الصّٰلِحِيْنَ

وَ
اور
يُكَلِّمُ
لوگوں سے
النَّاسَ
پن گھوڑے میں
فِي الْمَهْدِ
اور
وَ
کہولت میں۔ بڑی عمر میں
كَهْلًا
اور
وَّ
صالح لوگوں میں سے ہوگا
مِنَ الصّٰلِحِيْنَ
صالح لوگوں میں سے ہوگا

لوگوں سے گہوارے میں بھی کلام کرے گا اور بڑی عمر کو پہنچ کر بھی، اور وہ ایک مرد صالح ہوگا"

تفسير

قَالَتْ رَبِّ اَنّٰى يَكُوْنُ لِىْ وَلَدٌ وَّلَمْ يَمْسَسْنِىْ بَشَرٌ ۗ قَالَ كَذٰلِكِ اللّٰهُ يَخْلُقُ مَا يَشَاۤءُ ۗ اِذَا قَضٰۤى اَمْرًا فَاِنَّمَا يَقُوْلُ لَهٗ كُنْ فَيَكُوْنُ

قَالَتْ
کہنے لگیں
رَبِّ
اے میرے رب
اَنّٰى
کیونکر۔ کس طرح
يَكُوْنُ
ہوگا
لِيْ
میرے لیے
وَلَدٌ
ایک بچہ
وَّ
حالانکہ
لَمْ
نہیں
يَمْسَسْنِىْ
چھوا مجھ کو۔ ہاتھ لگایا مجھ کو
بَشَرٌ ۭ
کسی انسان کے
قَالَ
فرمایا
كَذٰلِكِ
اس طرح
اللّٰهُ
اللہ تعالیٰ
يَخْلُقُ
پیدا کرتا ہے
مَا
جو
يَشَاۗءُ
وہ چاہتا ہے ۭ
اِذَا
جب
قَضٰٓى
فیصلہ کرلیتا ہے
اَمْرًا
کسی کام کا
فَاِنَّمَا
تو بیشک
يَقُوْلُ
وہ کہتا ہے
لَهٗ
اس کو
كُنْ
ہوجا
فَيَكُوْنُ
تو وہ ہوجاتا ہے

یہ سن کر مریمؑ بولی، "پروردگار! میرے ہاں بچہ کہاں سے ہوگا، مجھے تو کسی شخص نے ہاتھ تک نہیں لگایا" جواب ملا، "ایسا ہی ہوگا، اللہ جو چاہتا ہے پیدا کرتا ہے وہ جب کسی کام کے کرنے کا فیصلہ فرماتا ہے تو بس کہتا ہے کہ ہو جا اور وہ ہو جاتا ہے"

تفسير

وَيُعَلِّمُهُ الْكِتٰبَ وَالْحِكْمَةَ وَالتَّوْرٰٮةَ وَالْاِنْجِيْلَۚ

وَ
اور
يُعَلِّمُهُ
کتاب
الْكِتٰبَ
اور
وَ
حکمت
الْحِكْمَةَ
اور
وَ
تورات
التَّوْرٰىةَ
اور
وَ
انجیل
الْاِنْجِيْلَ
انجیل

(فرشتوں نے پھر سلسلئہ کلام میں کہا) "اور اللہ اُسے کتاب اور حکمت کی تعلیم دے گا، تورات اور انجیل کا علم سکھائے گا

تفسير

وَرَسُوْلًا اِلٰى بَنِىْۤ اِسْرٰۤءِيْلَ ۙ اَنِّىْ قَدْ جِئْتُكُمْ بِاٰيَةٍ مِّنْ رَّبِّكُمْ ۙ اَنِّىْۤ اَخْلُقُ لَـكُمْ مِّنَ الطِّيْنِ كَهَیْـــَٔةِ الطَّيْرِ فَاَنْفُخُ فِيْهِ فَيَكُوْنُ طَيْرًاۢ بِاِذْنِ اللّٰهِۚ وَاُبْرِئُ الْاَ كْمَهَ وَالْاَبْرَصَ وَاُحْىِ الْمَوْتٰى بِاِذْنِ اللّٰهِۚ وَ اُنَبِّئُكُمْ بِمَا تَأْكُلُوْنَ وَمَا تَدَّخِرُوْنَۙ فِىْ بُيُوْتِكُمْۗ اِنَّ فِىْ ذٰلِكَ لَاٰيَةً لَّـكُمْ اِنْ كُنْتُمْ مُّؤْمِنِيْنَۚ

وَ
اور
رَسُوْلًا
طرف بنی اسرائیل کے
اِلٰى بَنِىْٓ اِسْرَاۗءِيْلَ ڏ
بیشک میں
اَنِّىْ
تحقیق
قَدْ
میں لایا ہوں تمہارے پاس
جِئْتُكُمْ
ایک نشانی
بِاٰيَةٍ
تمہارے رب کی طرف سے
مِّنْ رَّبِّكُمْ ۙ
بیشک میں
اَنِّىْٓ
میں بنادیتا ہوں
اَخْلُقُ
تمہارے لیے
لَكُمْ
مٹی سے
مِّنَ الطِّيْنِ
مانند شکل
كَهَيْــــَٔــةِ
پرندے کی
الطَّيْرِ
پھر میں پھونک مار دوں گا اس میں
فَاَنْفُخُ فِيْهِ
تو وہ ہوجائے گا
فَيَكُوْنُ
ایک پرندہ
طَيْرًۢ ا
اللہ کے اذن سے
بِاِذْنِ اللّٰهِ ۚ
اور
وَ
میں اچھا کردیتا ہوں
اُبْرِئُ
مادرزاد اندھے کو۔ پیدائشی اندھے کو
الْاَكْمَهَ
اور
وَ
برص والے کو۔ کوڑھی کو
الْاَبْرَصَ
اور
وَ
میں زندہ کرلیتا ہوں
اُحْىِ
مردوں کو
الْمَوْتٰى
اللہ کے اذن کے ساتھ
بِاِذْنِ اللّٰهِ ۚ
اور
وَ
میں بتاتا ہوں تم کو۔ میں خبر دیتا ہوں تم کو
اُنَبِّئُكُمْ
ساتھ اس کے جو
بِمَا
تم کھاتے ہو
تَاْكُلُوْنَ
اور
وَ
جو
مَا
تم ذخیرہ کرتے ہو
تَدَّخِرُوْنَ ۙ
میں
فِيْ
اپنے گھروں (میں)
بُيُوْتِكُمْ ۭ
بیشک
اِنَّ
اس میں
فِيْ ذٰلِكَ
البتہ ایک نشانی ہے
لَاٰيَةً
تمہارے لیے
لَّكُمْ
اگر
اِنْ
ہو تم
كُنْتُمْ
ایمان لانے والے
مُّؤْمِنِيْنَ
ایمان لانے والے

اور بنی اسرائیل کی طرف اپنا رسول مقرر کرے گا" (اور جب وہ بحیثیت رسول بنی اسرائیل کے پاس آیا تو اس نے کہا) "میں تمہارے رب کی طرف سے تمہارے پاس نشانی لے کر آیا ہوں میں تمہارے سامنے مٹی سے پرندے کی صورت میں ایک مجسمہ بناتا ہوں اور اس میں پھونک مارتا ہوں، وہ اللہ کے حکم سے پرندہ بن جاتا ہے میں اللہ کے حکم سے مادر زاد اندھے اور کوڑھی کو اچھا کرتا ہوں اور مُردے کو زندہ کرتا ہوں میں تمہیں بتاتا ہوں کہ تم کیا کھاتے ہو اور کیا اپنے گھروں میں ذخیرہ کر کے رکھتے ہو اس میں تمہارے لیے کافی نشانی ہے اگر تم ایمان لانے والے ہو

تفسير

وَمُصَدِّقًا لِّمَا بَيْنَ يَدَىَّ مِنَ التَّوْرٰٮةِ وَلِاُحِلَّ لَـكُمْ بَعْضَ الَّذِىْ حُرِّمَ عَلَيْكُمْ وَجِئْتُكُمْ بِاٰيَةٍ مِّنْ رَّبِّكُمْۗ فَاتَّقُوْا اللّٰهَ وَاَطِيْعُوْنِ

وَ
اور
مُصَدِّقًا
واسطے اس کے جو
لِّمَا
میرے سامنے ہے
بَيْنَ يَدَيَّ
سے
مِنَ
تورات (میں سے)
التَّوْرٰىةِ
اور
وَ
تاکہ میں حلال کردوں
لِاُحِلَّ
تمہارے لیے
لَكُمْ
بعض وہ چیز
بَعْضَ الَّذِيْ
جو حرام کی گئی
حُرِّمَ
تم پر
عَلَيْكُمْ
اور
وَ
میں لایا ہوں تمہارے پاس
جِئْتُكُمْ
ایک نشانی
بِاٰيَةٍ
تمہارے رب کی طرف سے
مِّنْ رَّبِّكُمْ ۣ
پس ڈرو
فَاتَّقُوا
اللہ سے
اللّٰهَ
اور
وَ
اطاعت کرو میری
اَطِيْعُوْنِ
اطاعت کرو میری

اور میں اُس تعلیم و ہدایت کی تصدیق کرنے والا بن کر آیا ہوں جو تورات میں سے اِس وقت میرے زمانہ میں موجود ہے اوراس لیے آیا ہوں کہ تمہارے لیے بعض اُن چیزوں کو حلال کر دوں جو تم پر حرام کر دی گئی ہیں دیکھو، میں تمہارے رب کی طرف سے تمہارے پاس نشانی لے کر آیا ہوں، لہٰذا اللہ سے ڈرو اور میر ی اطاعت کرو

تفسير