Skip to main content
ARBNDEENIDRUTRUR
إِنَّ
بیشک
ٱلَّذِينَ
وہ لوگ
يَكْفُرُونَ
جو کفر کرتے ہیں
بِـَٔايَٰتِ
ساتھ آیات کے
ٱللَّهِ
اللہ کی
وَيَقْتُلُونَ
اور وہ قتل کردیتے ہیں
ٱلنَّبِيِّۦنَ
نبیوں کو
بِغَيْرِ
بغیر
حَقٍّ
حق کے
وَيَقْتُلُونَ
اور قتل کرتے ہیں
ٱلَّذِينَ
ان لوگوں کو
يَأْمُرُونَ
جو حکم دیتے ہیں
بِٱلْقِسْطِ
انصاف کا
مِنَ
میں سے
ٱلنَّاسِ
لوگوں
فَبَشِّرْهُم
تو بشارت دو ان کو۔ خوش خبری دو ان کو
بِعَذَابٍ
عذاب کی
أَلِيمٍ
دردناک

جو لوگ اللہ کے احکام و ہدایات کو ماننے سے انکار کرتے ہیں اور اس کے پیغمبروں کو ناحق قتل کرتے ہیں اور ایسے لوگوں کی جان کے درپے ہو جاتے ہیں، جو خلق خدا میں عدل و راستی کا حکم دینے کے لیے اٹھیں، ان کو درد ناک سزا کی خوش خبری سنا دو

تفسير
أُو۟لَٰٓئِكَ
یہی
ٱلَّذِينَ
وہ لوگ ہیں
حَبِطَتْ
ضائع ہوگئے
أَعْمَٰلُهُمْ
اعمال ان کے
فِى
میں
ٱلدُّنْيَا
دنیا
وَٱلْءَاخِرَةِ
اور آخرت میں
وَمَا
اور نہیں
لَهُم
ان کے لیے
مِّن
میں سے
نَّٰصِرِينَ
مددگاروں

یہ وہ لوگ ہیں جن کے اعمال دنیا اور آخرت دونوں میں ضائع ہوگئے، اور ان کا مددگار کوئی نہیں ہے

تفسير
أَلَمْ
کیا نہیں
تَرَ
تم نے دیکھا
إِلَى
طرف
ٱلَّذِينَ
ان لوگوں کی
أُوتُوا۟
جو دیے گئے
نَصِيبًا
ایک حصہ
مِّنَ
میں سے
ٱلْكِتَٰبِ
کتاب
يُدْعَوْنَ
وہ بلائے جاتے ہیں
إِلَىٰ
طرف
كِتَٰبِ
کتاب کے
ٱللَّهِ
اللہ کی
لِيَحْكُمَ
تاکہ وہ فیصلہ کرے
بَيْنَهُمْ
ان کے درمیان
ثُمَّ
پھر
يَتَوَلَّىٰ
اللہ کی منہ موڑتا ہے۔ پہلو تہی کرتا ہے
فَرِيقٌ
ایک گروہ
مِّنْهُمْ
ان میں سے
وَهُم
اور وہ
مُّعْرِضُونَ
منہ موڑنے والے ہیں۔ اعراض کرنے والے ہیں

تم نے دیکھا نہیں جن لوگوں کو کتاب کے علم میں سے کچھ حصہ ملا ہے، اُن کا حال کیا ہے؟اُنہیں جب کتاب الٰہی کی طرف بلایا جاتا ہے تاکہ وہ اُن کے درمیان فیصلہ کرے، تو ان میں سے ایک فریق اس سے پہلو تہی کرتا ہے اور اس فیصلے کی طرف آنے سے منہ پھیر جاتا ہے

تفسير
ذَٰلِكَ
یہ
بِأَنَّهُمْ
بوجہ اس کے بیشک وہ
قَالُوا۟
وہ کہتے ہیں
لَن
ہرگز نہ
تَمَسَّنَا
چھوئے گی تم کو
ٱلنَّارُ
آگ
إِلَّآ
مگر
أَيَّامًا
دن
مَّعْدُودَٰتٍۖ
گنتی کے
وَغَرَّهُمْ
اور دھوکے میں ڈالا
فِى
میں
دِينِهِم
ان کے دین
مَّا
جو اس چیز نے جو
كَانُوا۟
تھے وہ
يَفْتَرُونَ
وہ جھوٹ گھڑتے

ان کا یہ طرز عمل اس وجہ سے ہے کہ وہ کہتے ہیں "آتش دوزخ تو ہمیں مس تک نہ کرے گی اور اگر دوزخ کی سزا ہم کو ملے گی بھی تو بس چند روز" اُن کے خود ساختہ عقیدوں نے اُن کو اپنے دین کے معاملے میں بڑی غلط فہمیوں میں ڈال رکھا ہے

تفسير
فَكَيْفَ
تو کس طرح ہوگا
إِذَا
جب
جَمَعْنَٰهُمْ
جمع کریں گے ہم ان کو
لِيَوْمٍ
ایک دن کے لیے
لَّا
نہیں
رَيْبَ
کوئی شک
فِيهِ
اس میں
وَوُفِّيَتْ
پورا پورا دیا جائے گا
كُلُّ
ہر
نَفْسٍ
نفس کو
مَّا
جو
كَسَبَتْ
اس نے کمائی کی
وَهُمْ
اور وہ
لَا
نہ
يُظْلَمُونَ
ظلم کیے جائیں گے

مگر کیا بنے گی اُن پر جب ہم انہیں اُس روز جمع کریں گے جس کا آنا یقینی ہے؟ اس روز ہر شخص کو اس کی کمائی کا بدلہ پورا پورا دے دیا جائیگا اور کسی پر ظلم نہ ہوگا

تفسير
قُلِ
کہہ دیجیے
ٱللَّهُمَّ
اے اللہ
مَٰلِكَ
اے مالک
ٱلْمُلْكِ
بادشاہت کے
تُؤْتِى
تو دیتا ہے
ٱلْمُلْكَ
بادشاہت
مَن
جس کو
تَشَآءُ
تو چاہتا ہے
وَتَنزِعُ
تو چھین لیتا ہے
ٱلْمُلْكَ
بادشاہت
مِمَّن
جس سے
تَشَآءُ
تو چاہتا ہے
وَتُعِزُّ
اور تو عزت دیتا ہے
مَن
جس کو
تَشَآءُ
تو چاہتا ہے
وَتُذِلُّ
تو ذلیل کرتا ہے
مَن
تَشَآءُۖ
اور جس کو تو چاہتا ہے
بِيَدِكَ
تیرے ہاتھ میں
ٱلْخَيْرُۖ
بھلائی ہے
إِنَّكَ
بیشک تو
عَلَىٰ
اوپر
كُلِّ
ہر
شَىْءٍ
چیز کے
قَدِيرٌ
قادر ہے

کہو! خدایا! مُلک کے مالک! تو جسے چاہے، حکومت دے اور جسے چاہے، چھین لے جسے چاہے، عزت بخشے اور جس کو چاہے، ذلیل کر دے بھلائی تیرے اختیار میں ہے بیشک تو ہر چیز پر قادر ہے

تفسير
تُولِجُ
تو داخل کرتا ہے
ٱلَّيْلَ
رات کو
فِى
میں
ٱلنَّهَارِ
دن
وَتُولِجُ
اور تو داخل کرتا ہے
ٱلنَّهَارَ
دن کو
فِى
میں
ٱلَّيْلِۖ
رات
وَتُخْرِجُ
اور تو نکالتا ہے
ٱلْحَىَّ
زندہ کو
مِنَ
سے
ٱلْمَيِّتِ
مردہ
وَتُخْرِجُ
او ر تو نکالتا ہے
ٱلْمَيِّتَ
مردہ کو
مِنَ
اور
ٱلْحَىِّۖ
زندہ سے
وَتَرْزُقُ
تو رزق دیتا ہے
مَن
جس کو تو
تَشَآءُ
چاہتا ہے
بِغَيْرِ
بغیر
حِسَابٍ
حساب کے

رات کو دن میں پروتا ہوا لے آتا ہے اور دن کو رات میں جاندار میں سے بے جان کو نکالتا ہے اور بے جان میں سے جاندار کو اور جسے چاہتا ہے، بے حساب رزق دیتا ہے

تفسير
لَّا
نہ
يَتَّخِذِ
بنائیں
ٱلْمُؤْمِنُونَ
مومن
ٱلْكَٰفِرِينَ
کافروں کو
أَوْلِيَآءَ
دوست
مِن
کے
دُونِ
سوا ۚ
ٱلْمُؤْمِنِينَۖ
مومنوں
وَمَن
اور جو کوئی
يَفْعَلْ
کرے گا
ذَٰلِكَ
یہ۔ ایسا
فَلَيْسَ
تو نہیں
مِنَ
سے
ٱللَّهِ
اللہ
فِى
میں
شَىْءٍ
کسی چیز
إِلَّآ
مگر
أَن
یہ کہ
تَتَّقُوا۟
تم بچو
مِنْهُمْ
ان سے
تُقَىٰةًۗ
بچنا
وَيُحَذِّرُكُمُ
اور ڈرائے تم کو
ٱللَّهُ
اللہ
نَفْسَهُۥۗ
اپنی ذات سے
وَإِلَى
اور طرف
ٱللَّهِ
اللہ کے
ٱلْمَصِيرُ
لوٹنا ہے

مومنین اہل ایمان کو چھوڑ کر کافروں کو اپنا رفیق اور دوست ہرگز نہ بنائیں جو ایسا کرے گا اس کا اللہ سے کوئی تعلق نہیں ہاں یہ معاف ہے کہ تم ان کے ظلم سے بچنے کے لیے بظاہر ایسا طرز عمل اختیار کر جاؤ مگر اللہ تمہیں اپنے آپ سے ڈراتا ہے اور تمہیں اسی کی طرف پلٹ کر جانا ہے

تفسير
قُلْ
کہہ دیجیے
إِن
اگر
تُخْفُوا۟
تم چھپاؤ
مَا
جو
فِى
پر ہے
صُدُورِكُمْ
تمہارے سینوں
أَوْ
یا
تُبْدُوهُ
تم ظاہر کرو گے اس کو
يَعْلَمْهُ
جانتا ہے اس کو
ٱللَّهُۗ
اللہ
وَيَعْلَمُ
اوروہ جانتا ہے
مَا
جو
فِى
میں ہے
ٱلسَّمَٰوَٰتِ
آسمانوں
وَمَا
اور جو
فِى
میں ہے
ٱلْأَرْضِۗ
زمین
وَٱللَّهُ
اور اللہ
عَلَىٰ
اوپر
كُلِّ
ہر
شَىْءٍ
چیز کے
قَدِيرٌ
قادر ہے

اے نبیؐ! لوگوں کو خبردار کر دو کہ تمہارے دلوں میں جو کچھ ہے، اُسے خواہ تم چھپاؤ یا ظاہر کرو، اللہ بہرحال اسے جانتا ہے، زمین و آسمان کی کوئی چیز اس کے علم سے باہر نہیں ہے اور اُس کا اقتدار ہر چیز پر حاوی ہے

تفسير
يَوْمَ
جس دن
تَجِدُ
پائے گا
كُلُّ
ہر
نَفْسٍ
شخص
مَّا
جو
عَمِلَتْ
اس نے عمل کیا
مِنْ
میں سے
خَيْرٍ
نیکی
مُّحْضَرًا
حاضر کیا ہوا
وَمَا
اور جو
عَمِلَتْ
اس نے عمل کیا
مِن
میں سے
سُوٓءٍ
برائی
تَوَدُّ
وہ چاہے گا
لَوْ
کاش
أَنَّ
بیشک
بَيْنَهَا
اس کے درمیان (یعنی نفس)
وَبَيْنَهُۥٓ
اوراس کے درمیان (یعنی عمل)
أَمَدًۢا
فاصلہ ہوتا
بَعِيدًاۗ
دور کا
وَيُحَذِّرُكُمُ
اور ڈراتا ہے تم کو
ٱللَّهُ
اللہ
نَفْسَهُۥۗ
اپنی ذات سے
وَٱللَّهُ
اوراللہ
رَءُوفٌۢ
بہت شفقت کرنے والا ہے
بِٱلْعِبَادِ
بندوں پر

وہ دن آنے والا ہے، جب ہر نفس اپنے کیے کا پھل حاضر پائے گا خواہ اُس نے بھلائی کی ہو یا برائی اس روز آدمی یہ تمنا کرے گا کہ کاش ابھی یہ دن اس سے بہت دور ہوتا! اللہ تمہیں اپنے آپ سے ڈراتا ہے اور وہ اپنے بندوں کا نہایت خیر خواہ ہے

تفسير